ہرسال پاکستان میں کینسر کے تقریبا دو لاکھ مریض سامنے آرہے ہیں

0
71

چار فروری کینسر سے آگاہی کا عالمی دن منایا جاتا ہے،طبی ماہرین کے مطابق پاکستان میں ہر سال کینسر لگ بھگ دو لاکھ مریض سامنے آرہے ہیں جس کی بڑی وجہ تمباکو نوشی ہے۔

کینسر کا موذی مرض پاکستانیوں کو بھی بری طرح متاثر کر رہا ہے، 29 فیصد مریض علاج کے لیے بروقت اسپتال نہیں پہنچ پاتے جبکہ 30 فیصد کینسر کے آخری اسٹیج پر اسپتال کا رخ کرتے ہیں۔

پاکستان میں جگر، منہ، چھاتی، بڑی آنت اور دماغ کا کینسر زیادہ پایا جاتا ہے، ڈاکٹروں کے مطابق تمباکو نوشی کینسر پھیلانے کا بڑا ذریعہ ہے جس کی روک تھام اشد ضرور ی ہے۔

ڈاکٹر وں کا کہنا ہے کہ صحت مند طرز زندگی،متوازن خوراک اور وزن پر کنٹرول سے کینسر کا خدشہ کم ہوسکتا ہے ۔ہیپاٹائٹیس سی کے مریض جگر کے کینسر میں زیادہ مبتلا ہورہے ہیں، جگر سکڑ جاتا ہے اور مریض کو پتہ ہی نہیں چلتا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ کینسر پر قابو پانے کےلیے علاج و معالجہ کی مکمل سہولتوں کی فراہمی یقینی بنانا ہوگی، اس کے ساتھ ساتھ بھر پور آگاہی مہم بھی چلانے کی ضرورت ہے

SHARE

LEAVE A REPLY