عام انتخابات 2018ء، پاکستانی تاریخ کے مہنگے ترین الیکشن ہوں گے

0
102

الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کے مطابق عام انتخابات کے انعقاد پر 21 ارب روپے سے زائد کے اخراجات آئیں گے۔

عام انتخابات 2018ء، پاکستانی تاریخ کے مہنگے ترین الیکشن قرار، 2013ء کی نسبت اخراجات میں پانچ گنا اضافہ، سرکاری خرچ کا تخمینہ 21 ارب روپے سے زائد ہے۔

دستاویزات کے مطابق عام انتخابات میں اس بار مہنگا امپورٹڈ بیلٹ پیپر استعمال کیا جا رہا ہے جبکہ پولنگ سٹاف کا اعزازیہ بھی 3000 سے بڑھا کر 8000 روپے کر دیا گیا ہے۔

یوں 2013ء میں ایک ووٹر پر آنے والا 58 روپے کا خرچہ 140 روپے اضافے کیساتھ اس بار 198 روپے ہو چکا ہے۔ 2013ء میں الیکشن کمیشن نے انتخابات پر 4 ارب 73 کروڑ روپے خرچ کیے تھے۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے قومی اسمبلی کے امیدوار کے لیے حلقے میں انتخابی اخراجا ت کی حد 40 لاکھ جبکہ صوبائی اسمبلی کے لیے 20 لاکھ روپے مقرر کی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ امیدواروں کی اکثریت اس حد سے تجاوز کر چکی ہے۔

بلوچستان کے ضلع مستونگ میں ہونے والے خودکش حملہ میں 149 افراد کی ہلاکت کے بعد سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر عام انتخابات 2018 کے دوران وفاقی حکومت نے بلوچستان کے 6 اضلاع میں موبائل انٹرنیٹ سروس بند کر دی ہے،

اس سلسلہ میں پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے الیکشن کمشن کو موبائل انٹرنیٹ سروس بند کرنے سے متعلق آگاہ کر دیا ہے۔

بلوچستان کے ضلع پشین، قلعہ عبداللہ اور مستونگ میں آج سے 31 جولائی تک موبائل انٹرنیٹ سروس بند رہے گی۔ جب کہ فروری2017 سے آوران، کیچ اور قلات میں بھی موبائل انٹرنیٹ سروس پہلے سے ہی بند ہے۔

پی ٹی اے کی جانب سے الیکشن کمشن کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ موبائل انٹرنیٹ سروس بند ہونے کی وجہ سے الیکشن کمشن کا رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم اور ووٹر ویری فکیشن سسٹم بھی متاثر ہوگا۔

SHARE

LEAVE A REPLY