تحریک انصاف کلین سویپ کریگی، ذوالفقار عباس بخاری

0
54

اسلام آباد (نوید نقوی) پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور عمران خان کے قریبی ساتھ سید ذوالفقار عباس بخاری المعروف زلفی بخاری کا کہنا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف 25جولائی کو کلین سویپ کریگی، الیکشن مہم کے دوران عوام کا والہانہ استقبال اس بات کا غماز ہے کہ عمران خان اب اس ملک کی باگ ڈور اپنے ہاتھ میں لیکر اس ملک کی تقدیر بدلیں گے، این اے 53میں جو شانداز الیکشن مہم چلائی گئی اس کی مثال شاید ہی ملے۔ ہمیں حلقہ این اے 53میں تحریک انصاف کی مہم چلانے کے لئے صرف تین ہفتے کا وقت میسر آیا، ہم نے اس عرصے میں زوردار انداز میں الیکشن کیمپین چلائی ہے، پوری ٹیم نے بھرپور محنت کی ہے، جس انداز میں اس حلقے میں مہم چلائی گئی ، بہت کم حلقے ہوں گے جن میں اس انداز میں مہم چلی ، عوام کی جانب سے بھرپور پذیرائی ملی، 25جولائی کو عوامی کی جانب سے نتیجہ بھی اچھا ملے گا ، اور بھرپورلیڈ کے ساتھ تحریک انصاف کامیاب ہو گی۔
تحریک انصاف کی جانب سے حکومتی تشکیل میں کن جماعتوں کو ترجیح دی جائے گی، اس حوالے سے ذوالفقار عباس بخاری کا کہنا تھا کہ ہم الیکشن میں کلین سویپ کریں گے، اور بھاری اکثریت سے جیتیں گے، اس کا فیصلہ کہ کن جماعتوں کے ساتھ ملکر حکومت بنائی جائے گی، یہ نتائج کے بعد فیصلہ کیا جائے گا، ابھی ہمارا فوکس یہ ہے کہ ہم الیکشن میں کلین سویت کریں گے۔
پاکستان قرضوں میں ڈوپ چکا ہے، تحریک انصاف اگر حکومت بنانے میں کامیاب ہو جاتی ہے تو کیا حکمت عملی اپناے گی، اس بارے زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ پاکستان چار سے چھ ہفتے کے اندر دیوالیہ ہونے کے قریب ہے، یہاں ڈالر ایک سو تیس کو پہنچ چکا ہے، تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اگر صورتحال بہتر نہ ہوئی تو ڈالر ایک سو پچاس تک پہنچے گا، یعنی اگر آپ نے آئی ایم ایس سے ایک ملین ڈالر کا قرضہ لیا ہو تو وہ قرضہ بڑھ کر کسی سود کے بغیر ایک سو پچاس پر پہنچ گیا ہے، بیٹھے بٹھائے آپ کے ملک کے قرضے میں پچا س فیصد اضافہ ہو گیا ہے، پہلی حکمت عملی یہ ہے کہ روپے کی گرتی قیمت کو روکا جائے، معیشت کی بہتری آنے والی حکومت سے بھی وابستہ ہے، جب اچھے لوگ برسراقتدار آئیں گے تو ملکی معیشت بھی درست ہوتی چلی جائے گی۔ زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ حکومت کی تشکیل کے بعد پہلے سو دن بہت اہم ہیں، پاکستان کا تاثر عالمی سطح پر بہتر بنانے کے لئے اقداما ت اٹھائے جائیں گے۔ حلقے میں مہم کے دوران جوانوں کی جانب سے بہت ہی خوش کن اور حوصلہ افزا ردعمل ملا، پی ٹی آئی کو جوانوں اور خواتین کی جانب سے زبردست سپورٹ ملی، اور انہی دو طبقات کی طرف سے ووٹ زیادہ سے زیادہ ملے گا، الیکشن مہم کے دوران ہم نے خواتین کے لئے ہیڈ کوارٹر الگ قائم کیا جس کی بدولت خواتین کی الیکشن مہم زبردست انداز میں چلی جس کے نتائج بھی ہمارے سامنے ہوں گے۔ ہم نے اپنی مہم کے دوران اپنی کوششوں کو جوانوں اور خواتین کے لئے 65فیصد تک مختص کیا، جوان اور خواتین ہمارے ہر اول دستے کا حصہ ہیں، چاہے وہ سپورٹس اینڈ کلچر فیڈریشن کی بات ہو یا خواتین ونگ ہو۔ ہماری اس مہم میں دو سو پاکستانی ہالینڈ ، انگلینڈ، امریکہ اور سعودی عرب سے آئے ہیں، جنہوں نے بھرپور انداز میں پی ٹی آئی اور عمران خان کے لئے تحریک چلائی ہے۔
ذوالفقار عباس بخاری کا کہنا تھا کہ ہمیں الیکشن مہم کے دوران اہم کامیابیاں حاصل ہوئیں ، ہمیں حلقے میں عوام کے ساتھ ساتھ کئی علاقوں یو سی چیرمین اورنواز لیگ کی بھاری بھرکم شخصیات نے جوائن کیا ، جن میں سید ظفر علی شاہ بھی شامل ہیں۔
حنیف عباسی کو سزا کے بعد حلقہ میں انتخابات ملتوی ہونے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما کا کہنا تھا کہ کسی بھی حلقے میں امیدوار کے انتقال کر جانے کے علاوہ کسی بھی صورت میں انتخاب ملتوی نہیں ہونے چاہیں، حنیف عباسی کے کورنگ امیدوار کو حصہ لینا چاہیے تھا، خدا نخواستہ جب تک کوئی بڑا حادثہ نہ ہو الیکشن کو ملتوی نہیں ہونا چاہیے۔
ایک تاثر یہ پایا جاتا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی چند قوتیں حمایت کر رہی ہیں، اور الیکشن میں اس کی پشت پناہی کر رہی ہیں، اس حوالے سے زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ جب شکست دکھائی دے رہی ہو، اور جب لوگوں کے ساتھ دس سال ظلم کیا ہو، تو کوئی نہ کوئی بہانہ تو اپوزیشن کو تراشنا ہوگا، ہمارا بیانیہ یہ ہے کہ نسبتاً دوسری جماعتوں کے الیکشن کمیشن اور ادارے ہم پر زیادہ سختی کر رہے ہیں ، مشرف صاحب جب حکومت میں آئے ، ان کے پاس آرمی بھی تھی، امریکی حمایت بھی تھی، عوام بھی تھی، ایسٹبلشمٹ ان کے ساتھ تھی تو کیا وجہ تھی کہ وہ ایم ایم اے کیساتھ ملے ، اگر سب طاقتیں ان کے ساتھ تھیں تو کیا وجہ بنی کہ انہوں نے اتحاد بنایا ، تو یہ کہنا کہ تحریک انصاف کے پیچھے کوئی طاقت ہے ایک غیر منطقی بات ہے۔
25جولائی کے حوالے سے اپنے پیغام میں زلفی بخاری نے کہا کہ پاکستا ن کے عوام جان لیں کہ یہ ہماری زندگی کا سب سے اہم لیکشن ہے، پاکستان جس دلدل میں دھنستا چلا جارہا ہے، اسے اس سے نکالنے اور ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے لئے ، آپکو حق کا ساتھ دینا ہوگا، اور پی ٹی آئی کو ووٹ ڈالنا ہوگا۔

SHARE

LEAVE A REPLY