آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار سابق وزیر اعلیٰ پنجاب، مسلم لیگ نون کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہبازشریف کو لاہور کی احتساب عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

اس سے قبل شہباز شریف کو سخت سیکیورٹی میں لاہور کی احتساب عدالت پہنچایا گیا تھا، دورانِ سماعت عدالت نے نیب کی جانب سے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کر دی۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد شہبازشریف کو جیل بھیجنے کے احکامات جاری کیے۔

شہبازشریف کی پیشی کے موقع پر مسلم لیگ نون کے کارکنوں نے نعرے لگائے، اس دوران لیگی کارکنوں کی پولیس سے تلخ کلامی اور ہاتھا پائی ہوئی۔

نون لیگی کارکنوں کا پولیس سے تصادم اس وقت ہوا جب انہوں نے سڑکوں پر رکھی گئی رکاوٹیں ہٹانے کی کوشش کی۔

پولیس نے مسلم لیگ نون کے کارکنوں پر لاٹھی چارج کیا جس سے بھگدڑ مچ گئی،پولیس نے متعدد لیگی کارکنوں کو گرفتار بھی کر لیا۔

احتساب عدالت کے ارد گرد کشیدگی پھیل گئی جبکہ اس صورت حال کے پیش نظر علاقے کی دکانیں پہلے ہی بند کرا دی گئی تھیںاور پولیس کو بڑی تعداد میں علاقے میں تعینات کیا گیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ پیشی پر احتساب عدالت نے شہباز شریف کو 6دسمبر تک جسمانی ریمانڈ پر نیب حکام کے حوالے کیا تھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY