کوٹ لکھپت جیل لاہور میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت سے متعلق ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان سخت تشویش میں مبتلاہوگئے۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم کو بازو میں وقفے وقفے سے تکلیف کی شکایت ہے،ان کے ذاتی معالج کو ملنے کی اجازت نہیں دی جارہی۔

نوازشریف کے ڈاکٹر نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ سابق وزیراعظم کو انجائنا کا خطرہ لاحق ہوسکتا ہے ،عارضہ قلب کے مریض کے بازو میں مسلسل درد خطرے کی بات ہے۔

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر عدنان صبح سے شام تک ملاقات کےلئے انتظار کرتے رہے ،نوازشریف کے ذاتی معالج نے جیل حکام کو سابق وزیراعظم کی صحت کے بارے میں سنگین خدشات سے آگاہ کیا ۔

ذرائع کے مطابق جیل کے میڈیکل افسر نے ڈاکٹر عدنان کو جواب دیا کہ یہ لاک اپ ٹائم ہے کچھ نہیں کرسکتا ،آپ پیر کو نوازشریف سے ملاقات کی کوشش کریں۔

جیو نیوز سے گفتگو میں ڈاکٹر عدنان نے نواز شریف کی صحت کی خرابی کے بارے میں تصدیق کی اور کہا کہ سارا دن انتظار کے بعد بھی ان کی ملاقات نہیں کرائی گئی ۔

ان کا کہناتھاکہ نواز شریف تک فوری رسائی کی اشد ضرورت ہے،نوازشریف کی صحت کے حوالے سے کوئی بھی خطرناک صورتحال پیدا ہو سکتی ہے۔

ڈاکٹر عدنان نے بتایا کہ جیل حکام نے شام 5 بجے جیل میں تعینات میڈیکل افسر سے بات کرائی ہے ۔

SHARE

LEAVE A REPLY