کوثر ثمرین نے ریڈیو پاکستان کے ایف ایم 94ورثہ کی انچارج کا منصب سنبھال لیا

1
880

کوثر ثمرین نے ریڈیو پاکستان کے ایف ایم 94ورثہ کی انچارج کا منصب سنبھال لیا

اسلام آباد میں ریڈیو پاکستان کے صدر دفتر سے موصولہ اطلاعات کے مطابق معروف شاعرہ۔ ادیبہ، ڈرامہ نگار ، گیت نگار ، براڈکاسٹر اور ڈپٹی کنٹرولر کوثر ثمرین نے اسلام آباد میں ہی ریڈیو پاکستان کے ایف ایم 94 ورثہ کی انچارج کا منصب سنبھال لیا

وہ اس سے قبل اسلام آباد میں ریڈیو پاکستان کی تربیتی اکیڈیمی میں نائب پرنسپل کے طور پر خدمات سرانجام دے رہی تھیں اور دیگر مناصب پر کام کرنے کے علاوہ ریڈیو اسکردو میں پہلی خاتون اسٹیشن ڈائر یکٹر کے طور پر بھی خدمات سرانجام دے چکی ہیں جہاں انہوں نے متنوع اور منفرد پروگراموں کی بنیاد ڈالی اور سیاچین جیسے بلند ترین مقام سے بھی نشریات کیں جنہیں پورے علاقے میں سراہا گیا

کوثر ثمرین شاعرہ کے طور پر ملک اور بیرون ملک جانی پہچانی جاتی ہیں اور انکا مجموعہ کلام بھی شائع ہو چکا ہے۔ انکو ٹی وی ریڈیو کے لیئے اہم تقریبات کے موقع پر گیت اور موضوعاتی اشعار لکھنے کا بھی تجربہ ہے اور اسکے علاوہ مائیکروفون پر گفتگو کرنے کا ایک الگ انداز رکھتی ہیں

اس دور میں جبکہ ریڈیو کی اہمیت اور افادیت کو بوجوہ کم کیا گیا ہے کوثر ثمرین ریڈیو پاکستان کے موجودہ اہل کاروں کی اس فہرست میں شامل ہیں جنکی خدمات اور فنی و قلمی تعاون سے پروگراموں میں نئی روح ڈالی جا سکتی ہے اور اس قومی ادارے کو ایک بار پھر مقبول عام بنایا جا سکتا ہے

اس وقت ریڈیو پاکستان میں سربراہ کے طور پر خورشید ملک اور ڈائریکٹر پروگرام کے طور پر وحید شیخ کے ساتھ ساتھ کنٹرولر ہوم فیاض بلوچ ایک نئی اور خالص ریڈیو کی ٹیم ہے جو یقینی طور پر ریڈیو کی اہمیت اور افادیت سے آگاہ ہے اور اہل کاروں کی اہلیت اور صلاحیت سے بھی واقف ہے۔ کوثر ثمرین کو ورثہ کا انچارج مقرر کر کے اس ٹیم نے یہ عندیہ دیا ہے کہ ریڈیو کا کھویا ہوا وقار بحال کیا جا سکتا ہے

کوثر ثمرین ریڈیو پاکستان میں پروڈیوسر کے طور پر آئی تھیں اور جس جس نشریاتی مرکز پر رہیں اپنا انفرادی رنگ دکھایا۔ اس لیئے یہ یقین کیا جا رہا ہے کہ وہ ورثہ چینل کو ایک نئی بلندی اور مقام دیں گی

ریڈیو پاکستان کا چینل ایف ایم چورانوے ورثہ کے نام سے جانا جاتا ہے جو پہلے ایف ایم چورانوے پلینٹ انگریزی کہلاتا تھا جسے بعد میں ورثہ کا نام دیا گیا اور اسکی انفرادیت یہ ہے کہ وہ سامعین جو ریڈیو کے مہذب اور ٹھہراو والے انداز کو پسند کرتے ہیں وہ اس سے مستفید ہوتے ہیں

اسمیں زیادہ تر ریڈیو کی اپنی پروڈکشنز پیش ہو تی ہیں اور سی پی یو سے استفادہ کیا جاتا ہے اور پاکستانیت کو اجاگر کیا جاتا ہے اور اسکی نشریات اسلام اباد کے علاوہ بیک وقت لاہور اور کراچی سے بھی نشر ہوتی ہیں۔

اسکی نشریات لائیو سٹریمنگ کے ذریعے دنیا بھر کے سامعین ریڈیو پاکستان کی سرکاری ویب سائٹ پر سن سکتے ہیں

کوثر ثمرین نے ٹیلی فون پر عالمی اخبار کو بتایا ہے کہ وہ ورثہ کے پروگراموں کا معیار مزید بہتر اور بلند کرنے کی کوشش کریں گی اور یہ بھی چاہیں گی کہ دنیا بھر سے اردو شعرا، ادبا اور ریڈیو پاکستان کے سینئر اور تجربہ کار شخصیات کے ساتھ پروگرام کیئے جائیں

صفدر ھمٰدانی۔ لندن

SHARE

1 COMMENT

  1. لکھ تے کڑوڑ تے کڑوڑوں بار مبارکباد ۔ثمرین تم سے زیادہ کون اس عہدے کا حقدار ہو سکتا تھا ۔ تم سے زہین اور وفادار آٹے میں نمک کے برابر ہیں ۔ قابل فخر دوست سدا خوشیوں میں رہو ۔۔ الہی آمین

LEAVE A REPLY