اِس میں کوئی شک نہیں کہ سابق جنرل (ر) راحیل شریف کو عوام الناس میں مقبولیت کا جو مقام حا صل ہواہے وہ ایک لمبے عرصے تک قائم رہے گا اِن کی عوام الناس میں اہمیت اور مقبولیت کا اندازہ اِس سے بھی لگایا جاسکتاہے کہ جب سے جنرل (ر)راحیل شریف نے اپنی سبکدوشی کا اعلان کیا تھاتب ہی سے عوامی مطالبہ یہ زورپکڑچکاتھاکہ راحیل شریف یہ اعلان واپس لیں اور اپنی ملازمت میں توسیع کریں

مگر جنرل راحیل شریف اپنی بات پر ڈٹے رہے اور بالآخروہ سبکدوش ہوگئے اِس طرح سابق جنرل (ر)راحیل شریف ایک اعلیٰ مثال قائم کرگئے ہیں آج قوم جنرل(ر)راحیل شریف کی طرح نئے آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ سے بھی اچھی اُمیدیں وابستہ رکھے جنرل قمر بھی قوم کی اُمیدوں اور معیار پر ضرور پورااُتریں گے۔

جبکہ راحیل شریف کی یوں سبکدوشی پر پچھلے د ِنوں شہرِ کراچی میں ایک ایساواقعہ بھی رونما ہوا جب کئی مزدورتحریکوں میں حصہ لینے والے دلیراور نامورمزدوررہنما لطف عیم شبلی سابق جنرل (ر)راحیل شریف کی مدت ملازمت میں توسیع نہ ہونے پر دلبرداشتہ ہوکر انتقال کرگئے، آج جہاں اِس واقعہ نے بہت سوں کو غم زدہ اور افسردہ کردیاہے تو وہیں شبلی کی موت نے بہت سارے سوالات کو بھی جنم دے ڈالا ہے اَب اِن سوالات کے حیر ت انگیز جوابات کے سب ہی منتظر ہیں کہ شبلی کی موت کی اصل وجہ کیا تھی؟یاخودکشی محض ایک…ہے؟

محمداعظم عظیم اعظم

SHARE

LEAVE A REPLY