حکومت پاکستان نے ملتان سے تعلق رکھنے والے رویت ہلال کمیٹی کے مستقل رکن مفتی عبدالقوی کی ممبرشپ منسوخ کردی ،وزرارت مذہبی امور نے نوٹیفیکیشن جاری کردیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مفتی عبدالقوی سے پاکستان مدرسہ بورڈ اورمذہبی امور کے حوالے سے دیگر خدمات بھی واپس لے لی گئی ہیں۔

میڈیا میں ماڈل قندیل بلوچ کے ساتھ سیلفی آنے پرحکومت نے مفتی عبدالقوی کی ممبرشپ معطل کردی تھی اوران کے خلاف تحقیقات کے لیے وزارت مذہبی امور نے کمیٹی بھی بنائی ۔

وزارت مذہبی امور نے مفتی عبدالقوی کو تحریری معافی مانگنے کی پیشکش بھی کی تاہم انہوں نے تحریری معافی مانگنے سے انکارکردیا تھا۔

وزارت مذہبی امور کی طرف سے قائم کمیٹی نے مفتی عبدالقوی کی ممبرشپ منسوخ کرنے کی سفارش کی اور ان کے خلاف کارروائی کو خفیہ رکھا گیا، مفتی عبدالقوی کے خلاف کارروائی کے حوالے سے مختلف مسالک میں اتفاق رائے نہیں تھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY