ایک وقت میں سب سے زیادہ شمع جلانے کا ریکارڈ

*31 دسمبر 2003ء کو سیرینا ہوٹل، فیصل آباد میں 48 افراد نے 8154 شمعیں جلاکر مشہور دواساز کمپنی سینڈوز کا لوگو بنایا۔ گنیز بک کے مطابق یہ ایک وقت میں سب سے زیادہ شمعیں جلانے کا عالمی ریکارڈ ہے۔
———————————————

کرنل (ر) غلام سرور کی پیدائش

٭ پاکستان کے ممتاز دانشور، کالم نگار، دفاعی تجزیہ نگار اور ادیب ۔ وہ انگریزی، اردو اور علوم اسلامی میں ماسٹرز کی ڈگریاں حاصل کرنے کے بعد درس و تدریس کے شعبے سے منسلک ہو گئے تھے۔ بعد ازاں انہوں نے پاک فوج کی ایجوکیشن کور سے وابستگی اختیار کی۔ کرنل (ر) غلام سرور کی تصانیف میں تقدیر امم، مسافر حرم، پطرس ایک مطالعہ، مطالعہ اسلامیات اور ان کی خود نوشت سوانح ’’آئینہ ایام‘‘ کے نام شامل ہیں۔ حکومت پاکستان نے انہیں 1982ء میں ستارئہ امتیاز (ملٹری) کے تمغے سے سرفراز کیا۔
کرنل (ر) غلام سرور 21 / دسمبر 2009ء کو لاہور میں وفات پا گئے۔
————————–
جمشید انصاری کی پیدائش

٭ پاکستان ٹیلی ویژن، ریڈیو اور سٹیج کے معروف فنکار جمشید انصاری کی تاریخ پیدائش 31 / دسمبر 1942ءہے۔ جمشید انصاری سہارنپور میں پیدا ہوئے تھے۔
قیام پاکستان کے بعد انہوں نے کراچی میں سکونت اختیار کی اور گریجویشن کرنے کے بعد لندن چلے گئے جہاں انہوں نے بی بی سی میں کام بھی کیا اور ٹیلی پروڈکشن کے کورس بھی مکمل کئے۔ 1968ء میں وہ پاکستان واپس آ گئے جہاں انہوں نے ریڈیو پاکستان میں صداکاری کے جوہر دکھانے شروع کئے۔ وہ ایک طویل عرصہ تک ریڈیو پاکستان کے مشہور سلسلے ’’حامد میاں کے ہاں‘‘ میں اپنی فنی صلاحیت کا مظاہرہ کرتے رہے۔
پاکستان میں ٹیلی ویژن کی آمد کے بعد انہوں نے پی ٹی وی لاہور مرکز کے ڈرامے جھروکے سے اپنی فنی زندگی کا آغاز کیا تاہم انہیں اصل شہرت کراچی مرکز سے ملی جہاں انہوں نے حسینہ معین کے لکھے ہوئے سیریلز کرن کہانی، زیر زبر پیش، انکل عرفی اور تنہائیاں میں یادگار کردار ادا کیے۔ ان کے دیگر مزاحیہ سیریلز میں یس سر نو سر، آشیانہ، خزانہ کا راز، رفتہ رفتہ، برگر فیملی، رات ریت اور ہوا، زہے نصیب، ماہ نیم شب اور چاند بابو کے نام سرفہرست ہیں۔
24 / اگست 2005ء کو جمشید انصاری طویل علالت کے بعد کراچی میں وفات پاگئے اور وہیں مغل پورہ قبرستان حب میں آسودئہ خاک ہیں۔
————————

عزم بہزاد کی پیدائش

اردو کے مقبول شاعر عزم بہزاد کا اصل نام مختار احمد تھا اور وہ 31 / دسمبر 1958ءکو کراچی میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ مشہور شاعر بہزاد لکھنوی کے پوتے تھے۔ ان کے والد افسر بہزاد بھی کراچی کے ممتاز شعرا میں شمار ہوتے تھے۔ عزم بہزاد کی شاعری کا مجموعہ” تعبیر سے پہلے“کے نام سے اشاعت پذیر ہوا تھا۔
عزم بہزاد 4 / مارچ 2011ءکو اردو کے مقبول شاعر عزم بہزاد کراچی میں وفات پاگئے وہ کراچی میں محمد شاہ قبرستان میں آسودہ خاک ہیں۔ ان کی ہجری تاریخ وفات ”تربت عزم بہزاد مرحوم“ اور عیسوی تاریخ وفات ”تربت خلق مجسم عزم بہزاد“ سے نکلتی ہے۔ عزم بہزاد کا ایک شعر ملاحظہ ہو

کتنے موسم سر گرداں تھے مجھ سے ہاتھ ملانے میں
میں نے شاید دیر لگادی خود سے باہر آنے میں

وقار زیدی ۔ کراچی

SHARE

LEAVE A REPLY