فلسطینی صدر محمود عباس ، امریکی سفارت خانے کی تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقلی روکنی ہو گی

0
386

فلسطینی صدر محمود عباس نےنو منتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو خبر دار کیا ہے کہ اگر امریکی سفارت خانے کی تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقلی نہ روکی گئی تو اسرائیل کے وجود کو تسلیم نہ کرنے پر غور کر سکتے ہیں ۔

انھوں نے کہاکہ ایسا کیا گیا تو اور بھی کئی آپشنز موجود ہیں جن پر عرب ملکوں کے سا تھ بات چیت میں غور کریں گے،جن میں سے ایک اسرائیل کے وجود کو تسلیم نہ کرنا بھی ہے مگر امید ہے کہ بات یہاں تک نہیں پہنچے گی ۔

فرانسیسی اخبار کو انٹرویو میں محمود عباس نے کہاکہ انھوں نے ٹرمپ کو خط لکھ کر ایسا نہ کرنے کو کہا ہے کیونکہ اس سے دو ریاستی حل کا منصوبہ کٹھائی میں پڑ جائے گا ۔

ٹرمپ کہہ چکے ہیں کہ وہ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کر تے ہوئے امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے یہاں منتقل کر دیں گے ۔

امریکا اور اقوام متحدہ کے زیادہ تر مما لک مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا حصہ تصور نہیں کرتے

SHARE

LEAVE A REPLY