سپریم کورٹ نے مردم شماری کو روکنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے مردم شماری کے فارم میں معذور افراد کا کالم نہ ہونے پر اٹارنی جنرل کو ادارہ شماریات سے ہدایات لے کر دو دن میں جواب پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے درخواست پر سماعت کی درخواست گزار کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ مردم شماری کے ابتدائی فارم میں معذور افراد کا کالم موجود تھے جسے حتمی فارم سے نکال دیا گیا ہے اب فارم میں معذور افراد کی معلومات کا کالم شامل نہیں ہے لہذا مردم شماری کے عمل کو روک دیا جائے

چیف جسٹس نے کہا کہ مردم شماری شروع ہونے میں تھوڑا وقت رہ گیا ہے اس مرحلے کو مردم شماری کو روکا گیا تو اس کے مستقبل پر اثرات ہوں گے چیف جسٹس نے کہا کہ معذور افراد کا کالم پہلے شامل کیا تھا تو ختم کیوں کیا گیا؟ معذور افراد کے کالم کو ختم کرنے کی وجہ کیا ہے عدالت نےاٹارنی جنرل کو ادارہ شماریات سے ہدایات لینے کے لئے دو دن کا وقت دیتے ہوئے جواب طلب کرلیا

SHARE

LEAVE A REPLY