دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا کا کہنا ہے کہ نیپال میں لاپتہ ہونے والے پاک فوج کے لیفٹیننٹ کرنل ریٹائرڈ محمد حبیب ظاہر کی گمشدگی میں غیر ملکی ایجنسیوں کے کردار کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔

اسلام آباد میں ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران نفیس ذکریا نے سابق کرنل کی نیپال میں پراسرار گمشدگی پر بات کرتے ہوئے کہا کہ انہیں نوکری کا جھانسہ دے کر پھنسایا گیا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ وہ اس معاملے میں نیپال حکومت کے ساتھ رابطے میں ہیں جبکہ نیپال حکومت پاکستان کے ساتھ تعاون کررہی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے سامنے آنے والی رپورٹس کے مطابق نیپال میں پراسرار طورپر لاپتہ ہونے والے ریٹائرڈ لیفٹیننٹ کرنل حبیب ظاہر کو ملازمت دینے کے لیے جہاز کا ٹکٹ بھیج کر بلایا گیا تھا، جہاں ان کا اپنے اہلخانہ سے آخری مرتبہ رابطہ بھارت کی سرحد کے قریبی علاقے لمبینی سے ہوا تھا۔

پاک فوج کے سابق کرنل حبیب ظاہر نیپال پہنچنے کے کچھ ہی دیر بعد لاپتہ ہوگئے تھے جس کے بعد ان کے اہلخانہ نے وزارت خارجہ کو آگاہ کیا تھا۔

بعد ازاں کرنل (ر) حبیب ظاہر کے بیٹے نے اپنے والد کے اغوا کے پیچھے ‘ملک دشمن عناصر’ کے ملوث ہونے کا شبہ ظاہر کیا تھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY