امریکی کی جانب سے افغاستان کے صوبے ننگر ہار میں گرائے گئے سب سے بڑے غیر جوہری بم کے باعث سرحد کے اس جانب (پاکستان میں) بھی اثرات دیکھے گئے ہیں اور کرم ایجنسی میں عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔

مقامی افراد کے مطابق بم دھماکے کے باعث سفید پہاڑ کے نام سے معروف اسپین گھر سے منسلک گاؤں مالانا میں متعدد مکانات، مساجد اور امام بارگاہوں کی دیواروں میں بڑی بڑی دراڑیں پیدا ہوگئی ہیں۔

خیال رہے کہ برف سے ڈھکا ہوا یہ پہار افغانستان کے صوبہ ننگر ہار اور پاکستانی کے قبائلی علاقے کرم ایجنسی کے درمیان ایک قدرتی رکاوٹ ہے۔

قبائلی عمائدین کے مطابق کرم ایجنسی کے علاقے ملانہ، زیڑان اور کڑمان میں گھروں اور مساجد اور امام بارگاہوں کونقصان پہنچا۔ دھماکے کے وقت زلزلے کی کیفیت تھی۔ دیوراوں میں دراڑئیں پڑ گئیں اور گھر کھنڈر بن گئے۔ لوگ سب چھوڑ چھاڑ کر محفوظ مقامات کی طرف نکل گئے

یاد رہے کہ 11 ستمبر کے واقعے کے بعد بھی امریکا نے تورا بورا کے پہاڑی علاقوں میں بمباری کی تھی جہاں القاعدہ کی محفوظ پناہ گاہیں موجود تھیں۔

جابر حسین

SHARE

LEAVE A REPLY