وزیراعظم نے شریف خاندان کے احتساب کو جعلی قراردے دیا

0
164

وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار ہے،اچھے فیصلے کی توقع ہے۔

وزیراعظم محمد نوازشریف وطن واپس پہنچ گئے، انھوں نے تاجکستان سے واپسی پر طیارے میں صحافیوں سے بھی گفتگو کی۔ ان کا کہناتھا کہ مظلوم بھی ہم ہیں احتساب بھی ہمارا ہورہا ہے جبکہ ان کا کہناتھا کہ لاک ڈاؤن بھی دیکھا لیا اور دھرنا بھی، سازشیں کرنیوالوں کو بھی دیکھ لیں گے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہماری نیت ٹھیک ہے،کوئی خورد برد نہیں کی،تحقیقاتی عمل سے گزرنا چاہتے ہیں۔ مگر یہ کیسا انصاف ہے کہ جس نے ایٹمی دھماکے کا بٹن دبایا اسی کا احتساب ہورہا ہے وہ بھی جعلی، مظلوم بھی ہم ہیں اور حساب بھی ہمارا ہورہا ہے۔

ان کا کہناتھا کہ عدالت کے فیصلے کا انتظار ہے اور ہمیں اچھے فیصلے کی توقع ہے۔وزیراعظم کا دعوی تھا کہ ہم پر کوئی الزام ہے نہ ہی جمہوریت کو مجھ سے کوئی خطرہ ہے،دوہزار چودہ کا دھرنا بھی دیکھ لیا، لاک ڈاؤن بھی ناکام رہا،ہر سازش میں شریک ساشیوں سے بھی نمٹ لیں گے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں مظالم سے پاک بھارت تعلقات خراب ہوئے، 100 سےزائد شہری شہید ہوئے۔ ایسے حالات میں بھارت سے کاروبار کی بات کیسے ہوسکتی ہے؟ بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں مظالم بند اور مسئلہ کشمیر کے حل کی طرف آنا چاہیئے۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ افغانستان کےالزام کا جواب دیا ہے، ہماری طرف سے کوئی مداخلت نہیں ہورہی، پہلے تاجکستان،پاکستان اور افغانستان اپنے معاملات بہتر کرلیں بھارت کا معاملہ پھر دیکھیں گے۔
اس سےقبل دوشنبے میں کاسا منصوبے کی تقریب سے خطاب میں وزیراعظم نے کہا کہ کاسا منصوبے سے نہ صرف وسطی ایشیا کو جنوبی ایشیا سے ملائے گا بلکہ اس کے ذریعے پاکستان اور افغانستان کو بجلی بھی ملے گی۔

منصوبے کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ یہ منصوبہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے، اس کے ذریعے تجارت اور روزگار کے مواقع پید ہونگے، منصوبے سے تاجکستان کو بھی فائدہ ہو گا۔
وزیراعظم نے اس عزم کا اظہار کیا کہ کاسا منصوبے سے ماحول دوست توانائی حاصل ہو گی اس کے ساتھ ساتھ تجارت اورروزگار کے مواقع بھی پیدا ہوں گے

SHARE

LEAVE A REPLY