نظرثانی کی درخواست پر پانچ رکنی لارجر بینچ تشکیل

0
73

سپریم کورٹ نے پاناما کیس فیصلے پر سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں کی نظرثانی درخواستوں پر سماعت کے لئے پانچ رکنی لارجر بینچ تشکیل دے دیا ہے،جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں  نظر ثانی درخواستوں پرسماعت کل ہوگی۔ 
تفصیلات کے مطابق آج سپریم کورٹ کے جسٹس اعجاز افضل خان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کے بچوں کی نظر ثانی اپیل کی سماعت کی تھی، جس میں وزیراعظم کے بچوں کے وکیل سلمان اکرم راجہ نےعدالت عظمیٰ سے استدعا کی تھی کہ نظر ثانی درخواستوں پر پانچ رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا جائے۔
جس پر جسٹس اعجاز افضل نے ریمارکس دیئے کہ آپ کی نظرثانی اپیل میں سارے گراؤنڈ تین رکنی بینچ کے فیصلے کے خلاف ہیں اور پاناما کیس میں اکثریتی فیصلہ تین رکنی بینچ کا تھا۔

سابق وزیراعظم میاں نواز شریف اور ان کے بچوں کی جانب سے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی جس میں استدعا کی گئی کہ پاناما کیس نظر ثانی اپیل پر سماعت کے لیے پانچ رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا جائے۔
سلمان اکرم راجہ کے توسط سے دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ 28 جولائی کو فیصلہ 5 رکنی لارجر بنچ نے دیا تھا اس لیے نظر ثانی اپیل بھی 5 رکنی بینچ میں لگائی جائے اور اس کے لیے 5 رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا جائےگا، بعد ازاں تین رکنی بینچ نے لارجر بینچ کی تشکیل کے لئے معاملہ چیف جسٹس کو بھجوا دیا تھا۔
جس پر چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان نے نظر ثانی اپیلوں کی سماعت کے لیے جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا ہے لارجر بینچ میں جسٹس گلزاراحمد اور جسٹس اعجاز افضل خان ، جسٹس عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن شامل ہوں گے

SHARE

LEAVE A REPLY