الیکشن اصلاحات بل قومی اسمبلی میں پیش، اپوزیشن کا احتجاج

0
132

الیکشن اصلاحات بل قومی اسمبلی میں منظور ی کے لیے پیش کردیا گیا، بل کی منظوری کے بعد نا اہل قرار دیا گیا شخص بھی سیاسی جماعت کا سربراہ بن سکے گا۔
اس موقع پر اپوزیشن نے احتجاج کیا ، اس موقع پر قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اپنے خطاب میں کہا کہ جمہوری روایت یہی ہیں کہ جو فیصلے ہوں پارلیمنٹ کے اندر ہو۔
انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ سے باہر بیٹھ کر فیصلے کرنے کی کوشش کی گئی اور اس کے نتائج بھی دیکھ لیے، بدقسمتی سے ایسے حالات پیدا کیے گئے کہ اپوزیشن نے بجٹ بحث میں حصہ نہیں لیا ۔
خورشید شاہ کا مزید کہنا تھا کہ ہم سمجھتے ہیں مسائل کا حل پارلیمنٹ ہے ، لیکن حکومت ہمیشہ پارلیمنٹ سے باہر جاتی ہے ، دنیا میں پٹرول کی قیمتیں کم ہورہی ہیں، آپ نے بڑھا دیں۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ کسی بھی طریقے سے لوگوں کا خون چوس کر ان سے پیسے نکالے جائیں، ڈیزل کی قیمتوں میں 31فیصد سیلز ٹیکس، 8روپے لیوی شامل کر دیا گیا ہے۔
اپوزیشن لیڈر کا مزید کہنا تھا کہ سننے میں آرہا ہے کہ بجلی کی قیمتیں بھی بڑھائی جارہی ہیں،حکومت اپنی ناکامی بالواسطہ ٹیکسوں سے چھپانا چاہتی ہے۔
خورشید شاہ نے مطالبہ کیا کہ پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ فی الفور واپس لیا جائے،بجلی کی قیمتیں نہ بڑھائی جائیں، امید ہے حکومت جواب دے گی

SHARE

LEAVE A REPLY