عراقی صدر فواد معصوم نے بغداد کی مرکزی حکومت اور کردستان کی علاقائی قیادت سے مسائل کو دو طرفہ مذاکرات سے حل کرنے پر زور دیا ہے۔ بغداد حکومت اور عراق کے نیم خود مختار کرد علاقے کے مابین کشیدگی میں اضافہ آزادی سے متعلق کرد ریفرنڈم کے بعد ہوا۔

عراقی صدر خود بھی ایک کرد ہیں لیکن ان کے اختیارات انتہائی محدود ہیں۔ گزشتہ روز عراقی فورسز نے تیل کی دولت سے مالا مال کرد علاقے کرکوک کی اہم سرکاری عمارات اور تیل کی تنصیبات کا کنٹرول سنبھال لیا تھا، جس کے بعد اس تنازعے میں مزید شدت پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY