کاربن ڈائی اکسائیڈ گیس کے اخراج میں، جسے عالمی حدت میں اضافے کے ایک بڑے خطرے کے طور پر دیکھا جاتا ہے، اس سال دو فی صد اضافہ ہو جائے گا۔

سائنس دانوں نے خبردار کیا ہے کہ کاربن گیسوں میں اضافہ کرہ ارض کے لیے سنگین مسائل پیدا ہورہے ہیں اور کاربن گیسوں کے اخراج میں اضافے سے زمین انسانی بقا خطرے میں پڑ جائے گی۔

کاربن گیسوں کے اخراج پر نظر رکھنے والے ادارے کی یہ رپورٹ پیر کے روز اقوام متحدہ میں پیش کی گئی۔

یونیورسٹی آف ایسٹ اینجیلا کے آب و ہوا کی تبدیلیوں سے متعلق مرکز کے ڈائریکٹر اور پورٹ کے مصنف کورین لی کیوری نے کاربن گیسوں کے اخراج میں اضافے کی سطح کو بہت مایوس کن قرار دیا۔

ان کا کہنا ہے کہ انسانی سرگرمیوں کے نتیجے میں 2017 میں اندازاً 41 ارب ٹن کاربن گیس کا اخراج، کرہ ارض کے درجہ حرارت کو دو ڈگری سینٹی گریڈ اضافے سے نیچے رکھنے کی ہماری کوششوں کو منفی طور پر متاثر کر ے گا۔

سن 2015 میں دنیا کے 196 ملکوں نے پیرس معاہدے میں یہ طے کیا تھا کہ وہ گلوبل ورامنگ میں اضافے کو روکنے کے لیے، عالمی درجہ حرارت کو صنعتی دور سے پہلے کی درجہ حرارت سے دو درجے سینٹی گریڈ نیچے لانے کے اقدامات کریں گے۔

SHARE

LEAVE A REPLY