طیبہ تشدد کیس: سپریم کورٹ کی ایڈووکیٹ جنرل کو مزید وقت دینے کی استدعا مسترد

0
97

سپریم کورٹ نے طیبہ تشدد کیس میں صلح نامے کی بنیاد پر بریت کی درخواست مسترد ہونے کے خلاف ایڈیشنل سیشن جج راجا خرم کی درخواست خارج کر دی۔ عدالت نے پراسیکیوٹرکی کارکردگی پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے 15 فروری تک ٹرائل مکمل کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے گھریلو ملازمہ طیبہ تشدد کیس میں صلح نامہ کی بنیاد پر بریت کی درخواست ہائیکورٹ سے مسترد کیے جانے کیخلاف مقدمے کی سماعت کی۔ مقدمے میں ملزم ایڈیشنل سیشن جج راجا خرم نے عدالت عالیہ کے فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا۔ سپریم کورٹ نے ایڈیشنل سیشن راجہ خرم کی درخواست خارج کر دی۔

عدالت کا کہنا تھا کہ مقدمے کا ٹرائل چل رہا ہے، درخواست میرٹ پر مبنی نہیں۔ عدالتی استفسار پر ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد نے بتایا کہ گواہوں کے بیانات ریکارڈ ہو رہے ہیں، فروری کے آخر تک ٹرائل مکمل ہو جائے گا۔ انہوں نے مزید وقت دینے کی استدعا کی جسے مسترد کرتے ہوئے سپریم کرٹ نے طیبہ تشدد کیس کا ٹرائل 15 فروری تک مکمل کرنے کا حکم دیا۔

SHARE

LEAVE A REPLY