رابطہ کمیٹی اراکین اور فاروق ستار میں اختلافات ختم نہیں ہو سکےبلکہ مزید بڑھ گئے۔ سینیٹ کی نشستوں کے لیئے رابطہ کمیٹی اور فاروق ستار آج اپنے اپنے امید واروں کے الگ الگ کاغذات نامزدگی جمع کرائیں گے ۔ ترجمان فاروق ستار کہتےہیں اب کاغذات جمع کرانے کے بعد مشاورت ہوگی۔

ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کا کہناہے کہ آپ بھی فارم جمع کرادیں ہم بھی کرادیتے ہیں جبکہ آپ سربراہ کو آئین دکھا رہے ہیں تو کیا دو تہائی اکثریت سے آپ سربراہ کو فارغ کرنا چاہتے ہیں؟اور اگر دو تہائی اکثریت آپ کے پاس ہے تو جو چاہے فیصلہ آپ کرلیں۔

فاروق ستار جو اپنی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے گفتگو کررہے تھے ،اس دوران ان کا کہنا تھا کہ میں اپنے گھر سے نکلنے کر بہادر آباد جانے والا تھا، سیڑھیاں اترتے ہوئے جیسے ہی پریس کانفرنس کا معلوم ہو امیں نے انہیں روکنے کا کہا،میں آنے کے لیے تیار تھا،منع نہیں کیا تھا، مگر پریس کانفرنس کر دی گئی، اتنی جلدی کیا تھی۔

صحافی کے سوال کے جواب میں فاروق کا کہنا تھا کہ میں نے بھی پریس کانفرنس روکنے کی پرچیاں بھجوائیں مگر نہیں روکی گئی، عامر خان کی دعوت پر بہادر آباد جانے کا فیصلہ ساتھیوں سے مشاورت کے بعد کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پریس کانفرنس کر کے ناموں کا اعلان کر دیا تو میرے پاس گنجائش نہیں بچی، میرا انتظار نہیں کیا گیا، سینیٹ کی سیٹوں کے لیئے ناموں کا اعلان کر کے غلطی کی گئی، جوابی پریس کانفرنس کر کے تسلیم کریں کہ جو کہا غلط کہااور بدتمیزی کرنے کے والے کانام بتائیں،جس پر نظم و ضبط کے مطابق کارروائی ہوگی۔

فاروق ستار کی میڈیا سے گفتگو کے دوران کینیڈا سے حیدر عباس رضوی کا فاروق ستار سے فون پر رابطہ،فون پر گفتگو کرتے ہوئے فاروق ستار نےحیدر عباس کو جھڑ ک دیا کہا کہ آپ نے بھی بہادر آباد کو سپورٹ کرنے کا کہا ہےاور کینیڈا میں بیٹھ کر پارٹی بن رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ رابطہ کمیٹی کے بہت سارے ایسے اراکین ہیں جو سرکاری ملازم ہیںجبکہ انتخابی قوانین میں وہ کسی پارٹی کے عہدیدار نہیں ہوسکتےاوراگر رابطہ کمیٹی کے ان دس ناموں کو نکال دیا جائے تو کیا بچے گا؟

انہوں نے کہا کہ بار بار آئین دکھا رہے ہیں،اجلاس غیر آئینی تھا کیونکہ میری اجازت نہیں تھی،پریس کانفرنس میں پہلے دن کی پوزیشن مستحکم کی گئی،تقسیم کی جانب کون لے جارہا ہے۔

ان کا کہنا تھا فیصل سبزواری بھائی نے بہت سی کڑوی کسیلی باتیں کیں ہیں،فیصل سبزواری کی باتوں سے دل آزری ہوئیجس سےصدمہ ہوا، فیصل سبزواری کی پریس کانفرنس میں شدید غصہ،میری پریس کانفرنس میں صدمہ نظر آئے گا۔

فاروق ستار کا کہنا تھا کہ میرے ذہن میں بھی آٹھ دس نام تھے،مگر آپ نے تو اعلان کردیا کہ فارم جمع کرانے جارہے ہیں،ہم ابھی فیصلہ کرتے ناموں کا، آپ نے تو اعلان کردیا۔

سربراہ ایم کیوایم پاکستان نے مزید کہا کہ کنور نوید کہہ رہے تھے کہ فاروق بھائی آرہے ہیں آپ پریس کانفرنس نہ کریں،میرے ساتھی نادانی میں غیر آئینی اجلاس میں ہونے والے غیر آئینی فیصلوں کا اعلان پریس کانفرنس کے ذریعے کرتے ہیں۔

ان کا کہناتھا کہ اگر میرے گھر میں کسی ساتھی نے رابطہ کمیٹی کے ساتھ بدتمیزی کی تومیں معافی مانگتا ہوں،مجھے نام بتائیں جس نے گالیاں دیں،میں خود معافی منگواوں گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY