کرکوک میں داعش اور پیشمرگہ فورسز کے درمیان دوبدو لڑائی

0
583

عراق کے شہر کرکوک کی سڑکوں پر داعش تنظیم کے ارکان اور پیشمرگہ فورسز کے درمیان دوبدو لڑائی جاری ہے۔ ایک غیرملکی خبر رساںایجنسی کے مطابق جمعے کی صبح داعش کے درجنوں جنگجو بھاری ہتھیاروں اور دستی بموں کے ساتھ شمالی عراق میں واقع اس شہر کے مختلف علاقوں میں پھیل گئے ان میں شہر کے وسطی اور جنوبی علاقے میں مساجد اور سڑکیں شامل ہیں۔
عینی شاہدین کے مطابق افغانی لباس میں ملبوس سر کو بڑے رمالوں سے ڈھانپے داعش کے ارکان نے متعدد عمارتوں کی چھتوں پر پوزیشنیں سنبھال لیں اور مساجد پر قبضہ کر لیا۔
عراقی ذمے داران کے اعلان کے مطابق دھماکا خیز مواد سے بھری جیکٹیں پہنے ہوئے خودکش بمباروں نے جمعے کی صبح شمالی عراق کے شہر کرکوک میں متعدد سرکاری عمارتوں پر حملہ کر دیا۔
حملے میں پولیس کے صدر دفتر ، سیکورٹی چنگیوں ، گشتی یونٹوں اور کرکوک کے شمال مغربی میں واقع قصبے دبس میں بجلی کے پاور اسٹیشن کو نشانہ بنایا گیا۔ عراقی دارالحکومت بغداد سے 240 کلومیٹر شمال میں واقع شہر پر کرد فورسز کا کنٹرول ہے۔ تاہم کرکوک شہر میں بجلی کی فراہم بلا انقطاع جاری ہے۔
عراقی ذمے داران کے مطابق دبس میں بجلی گھر پر حملے کے نتیجے میں 16 افراد ہلاک ہو گئے جن میں 12 عراقی ملازمین اور 4 ایرانی ٹیکنیشیئن شامل ہیں۔
ادھر پیشمرگہ فورسز نے اربیل اور سلیمانیہ سے کرکوک کی جانب کمک بھیجی ہے۔ “الحدث” نیوز چینل کے مطابق شہر میں کرد فورسز اور داعش کے ارکان کے درمیان سڑکوں پر لڑائی جاری ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY