امریکی صدرپر مواخذے کے سائے منڈلانے لگے،دو سابق ساتھیوں کےا عترافی بیان نے ڈونلڈ ٹرمپ کو مشکل میں ڈال دیا ہے۔

ٹرمپ کے سابق وکیل مائیکل کوہن نے ایف بی آئی کے ساتھ پلی بارگین کر لی،ٹیکس چوری اوربینک سے غلط بیانی سمیت 8 خلاف قانون اقدامات کا اعتراف کر لیا ۔

کوہن نے ایف بی آئی کے سامنے فحش فلموں کی اداکارہ اسٹارمی ڈینئل سمیت دوخواتین کوخاموش کرانے کا اعتراف بھی کرلیا۔

کوہن نے کہا کہ اسٹورمی ڈینیل سمیت دو خواتین کو چپ رکھنے کےلیے 1 لاکھ 30 ہزار اور ڈیڑھ لاکھ ڈالر دیے جو الیکشن پر اثر انداز ہونا چاہتی تھیں، ٹرمپ کے ساتھ طویل عرصہ گزارنے والے کوہن کو4سے 5 سال قید کی سزا ہوسکتی ہے، جس میں نرمی کےلیے وہ روسی مداخلت سے متعلق تعاون پر بھی غور کرسکتےہیں۔

امریکی صدر کے سابق کمپین منیجر پاول مینا فورٹ پر بھی بینک اورٹیکس فراڈ سمیت 8 جرائم ثابت ہوگئے،جس کے بعد ٹرمپ کے مواخذے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔

ٹرمپ کی انتخابی مہم کےسابق انچارج پال مینافورٹ پر مالی بدعنوانیوں کا جرم ثابت ہوگیا، جس میں ٹیکس فراڈ، بینک فراڈ اور بیرون ملک بینک اکاؤنٹس چھپانے کے جرم شامل ہیں، مینافورٹ اور کوہن کو 016 2کے الیکشن میں مبینہ روسی مداخلت کی تحقیقات کے نتیجے میں شامل تفتیش کیا گیا تھا۔

امریکی صدر نے مینافورٹ کو اچھا آدمی قرار دیا ،اس پر مقدمہ قائم کرنے اور اسے مجرم ٹھہرانے پر افسوس کا اظہار کیا اور اسے اپنے خلاف مہم کا حصہ قرار دیاہے۔

ٹرمپ نے یہ کہہ کر اپنا دفاع کیا کہ مینافورٹ کے کیس سے یہ ثابت نہیں ہوتا کہ اس میں وہ بھی ملوث ہیں، ٹرمپ کو ایک ہی دن میں تیسرا جھٹکا بھی لگا۔

صدر کےاقتصادی مشیرکےگھرانتہائی دائیں بازوکےلیڈرکومدعوکیےجانےکا انکشاف ہوا ہے، ایک کانفرنس میں پیٹربرملو کےساتھ پینل میں شریک ہونے پر صدر کے تقریر لکھنےوالےکومستعفی ہوناپڑاتھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY