چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ منصور علی شاہ کا کہنا ہے کہ حکم امتناع کے کلچرسے جان چھڑانی ہوگی، اس کے پیچھے چھپ کر کوئی کاروبار نہیں ہوسکتا، دنیا بھر میں تنازعات مصالحت سے حل کرنے کا طریقہ فروغ پارہا ہے۔

لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں مصحالتی سینٹر کے افتتاح کے موقع پر خطاب میں چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس منصور علی شاہ نے کہا کہ حکم امتناعی یا اسٹے آرڈر کے کلچر کو بھول جائیں، یہ کلچر معیشت اور کاروباری سرگرمیوں کو متاثر کرتا ہے، ایسا کلچر پیدا کرنا ہوگا کہ تنازعات افہام و تفہیم سے حل کیے جائیں۔

جسٹس منصور علی شاہ نے پیشکش کی کہ چیمبر میں مصالحتی نظام کو بہتر بنانے کے لیے جوڈیشل آئیڈیا میں کورس بھی کرائے جاسکتے ہیں

SHARE

LEAVE A REPLY