بحیرہ عرب میں پاکستان نیوی کے زیراہتمام کثیرالملکی بحری مشقیں کل سے شروع ہونگی مشقوں میں شرکت کے لئے نو ممالک کے بحری جہاز آج کراچی پہنچنا شروع ہوگئے ہیں مشقوں میں چین، روس، امریکا، جاپان، ترکی، برطانیہ اور آسٹریلیا کی افواج شریک ہونگی۔
روس کے بحری جہاز امن مشقوں میں پہلی بار شرکت کے لیئے کراچی پہنچ رہے ہیں جبکہ امریکی بحریہ بھی اپنے بحری اثاثوں اور اسپیشل آپریشنز فورس کے ساتھ شرکت کررہی ہے چینی بحریہ بھی تین بحری جہازوں اور اسپیشل آپریشنز فورس امن مشقوں میں شرکت کریں گی۔
وائس ایڈمرل عارف اللہ حسینی کے مطابق بحری امن مشقیں کسی ملک کے خلاف نہیں بلکہ اس کا مقصد ضرورت پڑنے پر ایک دوسرے کی مدد کرنا ہے ان کا کہنا تھا کہ بھارت کا عمل ہمیشہ سے پاکستان کے خلاف جارحانہ رہا ہے لیکن ہم ایک مضبوط قوم ہیں اور سمندر پر حاوی بھی اگر بھارت ہماری سمندری حدود میں جارحانہ عزائم لے کر آئے گا تو بچ کر نہیں جاسکتا۔
واضح رہے کہ سال دوہزار نو سے پاک بحریہ نے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق دوسری معروف بحری قوتوں کے ساتھ سی ٹی ایف میں شمولیت حاصل کی جو کہ بحری قزاقی کی روک تھام کے لیے کام کرتی ہے، پاک بحریہ کے جہاز شمالی بحیرہ عرب کے ساتھ ساتھ خلیج عدن کے پانیوں میں بھی عالمی سمندری تجارت کو یقینی بنارہے ہیں
امن مشقوں میں چھتیس ممالک کے بحری یونٹس اپنے آپریشنل صلاحیتوں میں اضافے کے لیئے مشق میں حصہ لے رہے ہیں جودس فروری تا چودہ فروری تک جاری رہے گی

SHARE

LEAVE A REPLY