متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے کہا ہے کہ سندھ کی شہری آبادی کے ساتھ امتیازی سلوک ہوا،مردم شماری سے متعلق ایم کیوایم کو تحفظات ہیں ،آج ہم نے بڑی نا انصافی کے خاتمے کے لیے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے ۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو میں فاروق ستار کا کہناتھاکہ سندھ کے عوام ایک عرصے سے بنیادی حقوق سے محروم ہیں، 15 مار چ سے پہلے مردم شماری میں دھاندلی کرتے ہوئے شہری علاقوں کے بلاکس کو کم دکھایاگیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب بلاکس کا شمار کم ہوگا تو گھروں کی گنتی بھی کم ہوگی ،مردم شماری سے قبل سندھ کے شہروں کی آبادی کو کم کرکے دکھایا جارہا ہے جو ناقابل فہم ہے۔

ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ کا کہناتھاکہ ہم نے یہ نکتہ اٹھایا ہے کہ کراچی، حیدرآباد، سکھر کے گھروں کےبلاکس میں اضافہ ہونا چاہئے تھا،ہم سپریم کورٹ سے انصاف مانگنے آئے ہیں۔

فاروق ستار نے کہا کہ سیلاب کے متاثرین بھی کراچی آئے،دہشت گردی سےمتاثرہونےوالے بھی یہاں ہی آئے ،لیکن شہری تناسب کو 18سال بعد مزید کم کردیاگیا ہے۔

ان کا اس حوالے سے مزید کہنا تھا کہ سندھ کے شہری علاقوں کے ساتھ امتیازی سلوک ہوا ہے، کراچی، حیدرآباد، سکھر کے لوگوں کو روزگار سے محروم رکھاگیاہے، ایم کیو ایم پاکستان ملک سے ناانصافیوں کے خاتمے کی جدوجہد کررہی ہے

SHARE

LEAVE A REPLY