آج امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں فلسطینی صدر محمود عباس کا خیر مقدم کیا۔ اس سے پہلے امریکی حکام نے کہا تھا کہ ٹرمپ عباس پر اسرائیلی جیلوں میں قید فلسطینیوں کے کُنبوں کو رقوم کی ادائیگی روک دینے کے لیے زور دیں گے۔

واشنگٹن حکومت کے خیال میں ایسا کرنا اُن کئی اقدامات میں سے ایک ہے، جن کے نتیجے میں اسرائیل کے ساتھ امن مذاکرات پھر سے بحال ہو سکتے ہیں۔ ٹرمپ اور عباس کے درمیان ہونے والی اس پہلی ملاقات میں فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیل مخالف بیان بازی اور پُر تشدد کارروائیوں کے لیے اُکسانے کا عمل بھی روکنے کے لیے زور دیا جائے گا۔

اس سال فروری میں ٹرمپ نے اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو سے ملاقات کی تھی۔

SHARE

LEAVE A REPLY