چمن میں باب دوستی پر پاک افغان کشیدگی برقرار ہے، پاکستان اور افغانستان کے درمیان ہونے والی فلیگ میٹنگ میں سرحد کی جغرافیائی حدود کے تعین پر اتفاق ہوگیا ہے۔

چمن میں باب دوستی پر پاک افغان سرحد پر کشیدگی کے خاتمے کے لیے پاک افغان فوجی حکام کے درمیان تیسری بار فلیگ میٹنگ ہوئی۔

میٹنگ میں پاکستانی وفد کی قیادت کمانڈر نارتھ سیکٹر بریگیڈیئر ندیم سہیل اور افغان وفد کی قیادت کرنل محمد شریف نے کی جبکہ میٹنگ میں پاکستان اور افغانستان کے جیولوجیکل سروے ٹیمیں بھی شریک تھیں۔

پاک افغان فوجی حکام کی فلیگ میٹنگ میں کلی لقمان اور کلی جہانگیر کا ارضیاتی سروے کرانے پر اتفاق ہوگیا ہے،مشترکہ جیولوجیکل سروے کے بعد رپورٹ اسلام آباد اور کابل بھیجی جائے گی ۔

سیکورٹی حکام کے مطابق چمن میں ہونے والی فلیگ میٹنگ میں جیو لوجیکل سروے کی ٹیموں نے شرکت کی ،اس موقع پر فیصلہ کیا گیا کہ سروے رپورٹ آنے تک چمن سرحد کو بند رکھا جائے گا۔

جیالوجیکل ٹیمیں پاک افغان حکام کے ہمراہ کلی لقمان اور کلی جہانگیر سمیت زیرو لائن کے مختلف مقامات کا سروے بھی کریں گی، اس کے لئے دونوں ممالک کی جیولوجیکل ٹیمیں گوگل اور دیگر نقشوں سے بھی مدد لیں گی ۔

سرحدی حدود کے تعین کے لیے پاک افغان جیولوجیکل ٹیموں نے مشترکہ سروے شروع کردیا ہے، سیکیورٹی حکام کے مطابق مشترکہ جیولوجیکل سروے میں 2 سے 3 دن لگ سکتے ہیں

SHARE

LEAVE A REPLY