ہالی ووڈ نے عدیم النظیر خاتون فنکارائیں دیں

0
159

امریکی فلمی صنعت جسے عرف عام میں ہالی ووڈ کہا جاتا ہے کی اداکاراﺅں نے اپنی باکمال اداکاری سے کروڑوں لوگوں کو متاثر کیا۔ ذیل میں ہم ان فنکاراﺅں کے بارے میں اپنے قارئین کو بتائیں گے جنہوں نے اپنی صلاحیتوں کے بل بوتے پر ایک عالم کو متاثر کیا۔
ان گرڈ برگ مین

کیا شاندار اداکارہ تھی۔ اس کی جتنی تعریف کی جائے اتنا ہی کم ہے۔ گیری کوپر کے ساتھ اس کی اداکاری کو ”فار ہوم دی بیل ٹالز“ میں کون بھول سکتا ہے۔ برگ مین سویڈن میں پیدا ہوئی تھی۔ اس نے ”اینا سیٹیسا“ اور ”گیس لائٹ“ میں لازوال اداکاری پر آسکر ایوارڈ جیتا۔ 1974ء میں اسے ”مروڑ آن دی اورینٹ ایکسپریس“ میں بہترین معاون اداکارہ کے طور پر آسکر ایوارڈ دیا گیا۔ برگ مین نے ”کاسا بلانکا“ اور ”سپیل باﺅنڈ“ میں بھی اتنی شاندار اداکاری کی کہ شائقین انگشت بدنداں رہ گئے۔ اس نے ”جون آف آرک“ کا کردار بھی ادا کیا۔ ”سپیل باوئنڈ“ الفریڈ ہچکاک کی فلم تھی اور اس فلم نے برگ مین کی شہرت میں بہت اضافہ کیا۔ 1967ء میں اس عدیم النظیر اداکارہ کا سرطان کے مرض کی وجہ سے انتقال ہو گیا۔
الزبتھ ٹیلر

ہالی وڈ کی پرانی فلموں کا ذکر کیا جائے تو الزبتھ ٹیلر کے نام کا ذکر نہ کرنا ناانصافی ہو گی۔ الزبتھ ٹیلر بہت حسین عورت تھی اور خاص طور پر اس نے اپنی جادوئی آنکھوں سے ہر کسی کو مسحور کر رکھا تھا۔ وہ بلا کی ذہین اداکارہ تھی۔ اس کی ایک وجہ شہرت اس کی بہت زیادہ شادیاں تھیں۔ ہالی وڈ کے نامور اداکار رچرڈ برٹن سے اس نے تین بار شادی کی۔ فلم ”قلوپطرہ“ میں بھی اس نے غضب کی اداکاری کی۔ الزبتھ ٹیلر کو دو دفعہ آسکر ایوارڈ دیا گیا جبکہ پانچ بار اسے اس ایوارڈ کیلئے نامزد کیا گیا۔ ہالی وڈ کی فلمی تاریخ میں اس اداکارہ کو ایک خصوصی مقام حاصل ہے۔ اپنی فطری اور بے ساختہ اداکاری کی وجہ سے اسے بہت پسند کیا جاتا تھا۔ اس نے بے شمار فلموں میں کام کیا اور بہت دولت کمائی۔
صوفیہ لورین

صوفیہ لورین کا تعلق اٹلی سے ہے۔ یہ بھی عظیم اداکارہ ہے اور اس نے اپنی زبردست اداکاری سے لاکھوں لوگوں کو اپنا گرویدہ بنایا۔ اس کی فلموں ”ٹو وومین“ اور ”سن فلاور“ کو کبھی فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ فلمی نقادوں کے نزدیک صوفیہ لورین بھی ایک پیدائشی فنکارہ ہے جو ہر کردار میں ڈوب جاتی ہے۔ اس نے بے شمار فلموں میں اپنی لاثانی اداکاری کے جوہر دکھائے۔ وہ بہت حسین عورت تھی۔ خاص طور پر ہالی وڈ کلاسیک ”فال آف دی رومن ایمپائر“ میں اس کا حسن اپنے عروج پر تھا۔ صوفیہ کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اتنی ذہین اداکارہ تھی کہ فوری طور پر اپنے کردار کی باریکیاں سمجھ لیتی تھی۔ وہ جس فلم میں بھی کام کرتی تھی۔ اس کا ہدایتکار اس بات پر مطمئن ہوتا تھا کہ صوفیہ لورین کو سمجھانے کی اتنی ضرورت نہیں کیونکہ وہ پہلے ہی فلم کا سکرپٹ کئی بار پڑھ چکی ہوتی تھی اور اسے زیادہ سمجھانے کی ضرورت پیش نہیں آتی تھی۔ وہ ہر لحاظ سے ایک عظےم اداکارہ تھی۔ اسے ایک بار آسکر ایوارڈ ملا۔
جولیا رابرٹس

اس اداکارہ نے کبھی یہ سوچا بھی نہیں ہو گا کہ وہ ایک دن امریکا کی مقبول ترین اداکارہ بن جائے گی۔ اس نے بڑا شاندار کام کیا اور کروڑوں لوگوں کو اپنی بے مثال اداکاری سے متاثر کیا۔ اس کے والدین بھی ایک زمانے میں ڈرامہ نگار اور اداکار تھے۔ جولیا رابرٹس کو چار دفعہ آسکر کیلئے نامزد کیا گیا جبکہ وہ یہ ایوارڈ حاصل کرنے میں ایک بار کامیاب ہوئی۔ یہ وہ اداکارہ ہے جس نے ہالی وڈ کی کئی اداکاراﺅں کو متاثر کیا۔ اداکاری کے لحاظ سے وہ اس نظریے کی حامی ہے کہ خود پر تنقید کی جائے جسے (Self Criticism) کہا جاتا ہے۔ اس کا شمار ان اداکاراﺅں میں ہوتا ہے جو ہر مشکل کردار کو چیلنج سمجھ کر قبول کرتی ہیں۔ دیگر اداکاراﺅں کی طرح اس نے بھی بہت دولت کمائی۔
میریل سٹریپ

بہت سے فلمی نقاد میریل سٹریپ کو ہالی وڈ کی تاریخ کی بہترین اداکارہ تسلیم کرتے ہیں۔ اگرچہ مارگریٹ تھیچر کا کردار ادا کرنے پر میریل سٹریپ پر خاصی تنقید کی گئی۔ جب میریل سٹریپ کو اس فلم میں آسکر کیلئے نامزد کیا گیا تو اس پر بھی ناپسندیدگی کا اظہار کیا گیا۔ نقادوں کی رائے میں سٹریپ کو ”جولی اینڈ جولیا“ میں بہترین اداکاری پر آسکر کیلئے نامزد کیا جانا چاہیے تھا۔ بہرحال آخری فیصلہ تو وہ لوگ کرتے ہیں جو آسکر کی نامزدگی کیلئے منتخب ہوتے ہیں۔ میریل سٹریپ کی سکرین پر موجودگی حیران کن ہوتی ہے۔ اکیڈمی ایوارڈ جیتنے والی یہ اداکارہ بتاتی ہے کہ ایک اداکارہ کو کیسا ہونا چاہیے۔
سٹریپ نے مختلف کردار ادا کر کے یہ ثابت کیا کہ وہ ایک ورسٹائل آرٹسٹ ہے۔ اس کی فلمیں کریمر ورسز کریمر، صوفیز چوائس، دی آئرن لیڈی، دی فرینچ لیفٹیننٹ وومین، سلک وڈ، آڈٹ آف افریقا، آئرن ویڈ، ایول سنگلز، پوسٹ کارڈز فرام دی امیج، دی برجیز آف میٹرسون کنٹری، ون ٹروننگ، میوزک آف دی ہارٹ، ایڈاپٹشن، دی ڈیول، ویرز پردہ، جولی اینڈ جولیا، اگست اولیج کنٹری ان ٹو دی وڈز اور فلورنس فوسٹر جینکز اس حقیقت کی غماز ہیں کہ سٹریپ ایک بہت ذہین اور حسین اداکارہ ہے۔
ساندرہ بلوک

کیا ساندرہ بلوک کو میریل سٹریپ کے بعد نمبر دو کے طور پر بہترین فنکارہ تسلیم کیا جا سکتا ہے۔ بہت سے فلمی نقادوں کا جواب اثبات میں ہے۔ کچھ نقاد اسے نمبر ون فنکارہ مانتے ہیں اور یہ نمبر ون آل ٹائم ہے۔ اس حقیقت کی شاید ہی کوئی تردید کر سکتا ہے کہ ساندرہ ایک نہایت شاندار اداکارہ ہے اور اس نے قدم قدم پر اپنی فنی عظمت کا لوہا منوایا۔ اس نے بھی اپنے آپ کو ورسٹائل اداکارہ ثابت کیا۔ مزاحیہ اداکاری ہو یا جذباتی مناظر، اس نے ہر کردار میں اپنے آپ کو منوایا۔ وہ ایک عجیب و غریب اداکارہ ہے، لیکن کام بڑی ذمہ داری سے کرتی ہے۔ جب وہ مزاحیہ اداکاری کرتی ہے تو ناظرین کے چہرے پر مسکراہٹیں نظر آتی ہیں۔ کچھ نقادوں کا خیال ہے کہ اسے نمبر دو کا درجہ نہیں دیا جا سکتا۔ وہ ایک اچھی اداکارہ ہے اور بس لیکن اکثریت کی رائے ہے کہ وہ ہالی ووڈ کی تاریخ کی دوسری بہترین اداکارہ ہے۔
نکول کڈمین

نکول کڈمین کو موجودہ دور کی ہالی وڈ کی سب سے حیران کن اداکارہ کہا جاتا ہے۔ وہ جتنی حسین ہے، اتنی ہی شاندار اداکارہ بھی ہے۔ اس کے بارے میں یہ کہا جاتا ہے کہ وہ بلا کی ذہین ہے۔ اس کے بارے میں یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ خیراتی اداروں کو بہت زیادہ رقم دیتی ہے۔ اس کے بارے میں یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ اپنی ایک جھلک دکھا کر پورا میلہ لوٹ لیتی ہے۔ وہ گا بھی سکتی ہے اور رقص بھی کر سکتی ہے۔ اس کی یادگار فلموں میں مولن راﺅگ، دی آرز، کولڈ ماﺅنٹین، بی وجڈ، ٹو ڈائی فار اور فلرٹنگ شامل ہیں۔ نکول کڈمین کو بعض حلقے دنیا کی حسین ترین عورت بھی قرار دیتے ہیں اور اسے دیوی کہتے ہیں۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ کم از کم تین آسکر ایوارڈ جیتے گی۔ بہت سے لوگوں کو اس بات پر حیرت ہے کہ نکول کڈمین کو ”ماﺅلن راﺅگ“ کیلئے آسکر ایوارڈ کیوں نہیں ملا۔ ویسے اس کی سمجھ خود کڈمین کو نہیں آئی۔ اسے بھی کامل یقین تھا کہ مذکورہ فلم میں اس نے جس کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ اس پر اسے یقینا آسکر ایوارڈ ملنا چاہیے تھا۔
جوڈی فوسٹر

اگر جوڈی فوسٹر کو پیدائشی اداکارہ کہا جائے تو یہ غلط نہ ہو گا۔ اس جیسی باکمال اداکارائیں کم ہی پیدا ہوتی ہیں۔ اسے سپر ایکٹریس بھی کہا جاتا ہے۔ فلم ”سائلنس آف دی لیمبس اور فائٹ پلان“ کی زبردست کامیابی کی اصل وجہ جوڈی فاسٹر کی زبردست اداکاری تھی۔ اگر اس چیز کو معیار بنایا جائے کہ حسن کے ساتھ اعلیٰ پائے کی اداکاری بھی ہو تو پھر جوڈی فوسٹر سے بڑھ کر کون ہو گا۔ اس نے کئی فلموں میں حیران کن اداکاری کا مظاہرہ کیا۔ البتہ یہ کہا جا سکتا ہے کہ کچھ فلموں میں اس نے کرداروں کے انتخاب میں عقلمندی کا مظاہرہ نہیں کیا اور اس کے مداحین کو بہت ملال ہوا۔ اس بات کا جوڈی فوسٹر کو بھی احساس ہے کہ اسے ایسے کردار قبول نہیں کرنا چاہیے تھے لیکن جوڈی کو ان غلطیوں پر معاف کیا جا سکتا ہے۔
انجلینا جولی

یہ اداکارہ بھی حسن اور فن کا مجسمہ ہے۔ یہ ان اداکاراﺅں میں سے ہے جن کا حسن بھی لاثانی ہے اور فن بھی اوج کمال کو پہنچا ہوا ہے۔ انجلینا جولی کے ساتھ بریڈ پٹ کا نام بھی آتا ہے۔ اگرچہ دونوں میں علیحدگی ہو چکی ہے لیکن دونوں کے دلوں میں ابھی تک ایک دوسرے کیلئے محبت کے جذبات موجزن ہیں۔ انجلینا جولی ایک ایثار کیش، انسان دوست اور درد مند خاتون ہے۔ اس نے اپنی خیرہ کن صلاحیتوں سے فن اداکاری کو ایک نئے اسلوب سے آشنا کیا۔ اس کے مداحوں کی تعداد کا اندازہ نہیں لگایا جا سکتا۔ اسے ہالی ووڈ کی تاریخ کی چند بہترین اداکاراﺅں میں سے ایک کہا جاتا ہے۔ اس کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ اسے جو کردار دیا جاتا ہے، وہ اس میں اتنا ڈوب جاتی ہے کہ لگتا ہے کہ شاید وہ اس کردار کیلئے پیدا ہوئی ہے۔ قدرت ایسی صلاحیتیں بہت کم لوگوں کو عطا کرتی ہے۔ ”ہیکرز“ سے لے کر ”مسٹر اینڈ مسز سمتھ“ تک انجلینا جولی نے حیران کن صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا۔ اس کے مداح یہ توقع کر رہے ہیں کہ انجلینا جولی کرداروں کے انتخاب میں اب بھی عقل و فراست سے کام لے گی۔
کیٹ ونسلیٹ

ٹائی ٹینک سے شہرت حاصل کرنے والی کیٹ ونسلیٹ اس قدر باصلاحیت اداکارہ ثابت ہو گی، اس کا اندازہ شاید کسی نے بھی نہیں کیا ہو گا۔ لیکن اس اداکارہ نے بہت جلد اپنی بہترین اداکاری کی وجہ سے وہ مقام حاصل کر لیا جو بہت کم لوگوں کے مقدر میں ہوتا ہے۔ کیٹ کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اس نے کم عمری میں ہی اداکاری کی معراج کو چھو لیا۔ اس نے بہت سے ایوارڈز حاصل کیے ہیں۔ وہ برطانوی اداکارہ اور گلوکارہ ہے جس کے مداحین کی تعداد کا کوئی شمار نہیں۔ کیٹ ونسلٹ کے بارے میں فلمی نقادوں کا یہی کہنا ہے کہ وہ بڑی جاندار اداکاری کرتی ہے۔ اس کی یادگار فلموں میں ”ٹائی ٹینک، دی ایڈر، مہیونلی کریچرز، سپاٹ لیس مائنڈ اور ملڈرڈ پیرس“ شامل ہیں۔ ان فلموں میں اس نے جس زبردست اداکاری کا مظاہرہ کیا اس کو دیکھ کر لگتا ہے کہ اس نے بڑی بڑی اداکاراﺅں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ آخر کیٹ ونسلٹ نے عظیم ترین اداکاراﺅں کی فہرست میں کیسے جگہ بنا لی؟ اس کا جواب یہ ہے کہ کیٹ ونسلٹ کے پاس اداکاری کی جو مہارت ہے وہ بہت کم اداکاراﺅں کے پاس ہے۔ اس کی اداکاری میں بہت گہرائی ہے اوریہ وہ لوگ جانتے ہیں جو فلم بنانا جانتے ہیں۔
ویسے تو ہالی وڈ کی کچھ اور اداکاراﺅں کا نام بھی لیا جا سکتا ہے جنہوں نے بہت شہرت حاصل کی اور اپنی باکمال اداکاری کی وجہ سے عظیم اداکارائیں کہلوائیں لیکن مذکورہ بالا دس اداکارائیں اس حوالے سے سب سے آگے ہیں۔ مشہور فلمی نقادوں کی ان کے بارے میں جو رائے ہے وہ اوپر بیان کر دی گئی ہے

SHARE

LEAVE A REPLY