امریکی صدر کے فیصلےکے خلاف مسلم ملکوں میں احتجاجی مظاہرے جاری

0
82

امریکاکے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنےکے اقدام کےخلاف مسلم ممالک میں غم وغصہ پایاجاتاہے،اور اسکے خلاف نمازجمعہ کےبعد دنیا بھر میں مظاہرے کئےگئے۔

امریکی اعلان کےخلاف اردن کےدارالحکومت عمان میں نمازجمعہ کےبعد مظاہرے کئےگئے۔مظاہرین نےامریکی صدراوراسرائیلی نشان والے بینرز کو قدموں تلے روندا۔

عراق میں مظاہرے میں اسرائیلی جھنڈے نذر آتش کئے گئے،مظاہرےمیں خواتین نے بھی شرکت کی۔افغانستان کےدارالحکومت کابل میں ہونےوالےمظاہرےمیں شہریوں کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کے فیصلےسےتشدد بڑھے گا۔مظاہرین نے اسرائیلی جھنڈےکو بھی نذرآتش کرکے غم وغصے کا اظہارکیا۔

امریکہ کی طرف سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کے بعد پاکستان میں حکومت سمیت سیاسی و مذہبی جماعتوں کی طرف سے اس کی مذمت کا سلسلہ جاری ہے۔

اسی دوران امریکی سفارت خانے نے پاکستان میں اپنے شہریوں کو اپنی سلامتی سے متعلق انتہائی محتاط رہنے کی ہدایت کی ہے۔

سفارت خانے سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلے کے بعد ہونے والے بعض مظاہرے پرتشد بھی ہو سکتے ہیں، لہٰذا امریکی شہری اپنی ذاتی سکیورٹی میں احتیاط برتیں۔

سفارت خانے کے بیان میں امریکی شہریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ سکیورٹی کی صورت حال سے آگاہی کے لیے مقامی میڈیا پر نظر رکھیں جب کہ امریکی شہریوں کو مظاہروں کے قریب علاقوں سے دور رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

بیان کے مطابق سکیورٹی صورتِ حال کے سبب امریکی سفارت خانے نے امریکی حکومت کے پاکستان میں ملازمین کی نقل و حرکت عارضی طور پر محدود کر دی ہے۔

ملک کے مختلف علاقوں میں صدر ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف احتجاج کا سلسلہ بھی جاری ہے اور جمعے کو نماز کے بعد وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سمیت ملک کے کئی شہروں میں امریکی فیصلے کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔

اسلام آباد میں سب سے بڑی ریلی جماعتِ اسلامی کے زیر اہتمام منعقد کی گئی۔

دنیائے اسلام میں ہونے والے مظاہروں میں شریک کروڑوں مسلمانوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے القدس کے بارے میں فیصلے کو مسترد کردیا۔

نامہ نگاروں کے مطابق جمعہ کے روز فلسطین، ترکی، ملائیشیا، اردن، ایران، مصر، پاکستان، انڈونیشیا، یمن، تیونس، بحرین، صومالیہ، بنگلہ دیش، مراکش، یورپی ممالک اور کئی دوسرے ملکوں میں فلسطینی پرچم اٹھا کر لاکھوں افراد نے القدس کی حمایت اور ٹرمپ کے اعلان کے خلاف جلوس نکالے۔

نماز جمعہ کے اجتماعات کے بعد عرب اورمسلمان ممالک میں مظاہروں میں شرکاء نے امریکی صدر ٹرمپ کے پتلے اور تصاویر بھی نذرآتش کیں۔

جمعہ کے روز پوری دنیا میں فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے 521 مظاہرے کیے گئے۔ ان میں ترکی میں 132 مقامات پر فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے مظاہرے ہوئے۔ اس کے علاوہ امریکی ریاستوں میں 91 مقامات پر احتجاج کیاگیا۔ یورپی ملکوں میں جرمنی، فرانس اور دیگر ممالک میں فلسطینیوں اور القدس کی نصرت کے لیے جلوس نکالے گئے۔

ترکی کے دارالحکومت استنبول میں سب سے بڑا احتجاجی مظاہرہ مسجد سلطان محمد فاتح کے باہر نکالا گیا۔ اس کے علاوہ ترکی کے کئی شہروں میں القدس کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے جلوس نکالے گئ

SHARE

LEAVE A REPLY