کراچی کی احتساب عدالت میں رکن قومی اسمبلی اور پاکستان پییپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما شرجیل انعام میمن کی جانب سے درخواست دائر کرانے کے بعد فردِ جرم عائد کرنے کی کارروائی آئندہ سماعت تک مؤخر کردی گئی۔

شرجیل انعام میمن اور سندھ کے محکمہ اطلاعات کے دیگر افراد کے خلاف محکمے میں مبینہ بدعنوانی کے حوالے سے احتساب عدالت میں قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے دائر ریفرنس کی سماعت ہوئی۔

سندھ کے سابق وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن دیگر شریک ملزمان سمیت کراچی کی احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔

سماعت کی آغاز میں شرجیل میمن کی جانب سے عدالت میں ایک اور درخواست دائر کی گئی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ نیب حکام نے اپنی رپورٹ میں ملزمان کی گرفتاری سے متعلق عدالت کو گمراہ کیا تاہم ان کی گرفتاری کے اقدامات کو غیر قانونی قرار دیا جائے۔

احتساب عدالت کے جج نے شرجیل میمن کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا وہ اس معاملے میں کچھ کہنا چاہتے ہیں تو انہوں نے کہا ’ہم چاہتے ہیں کہ شرجیل میمن ودیگر کی گرفتاری سے متعلق انکوئری کرائی جائے، چاہے تحقیقات نیب کے افسران ہی کیوں نہ کریں۔‘

انہوں نے موقف اختیار کیا کہ نیب حکام نے شرجیل میمن کی گرفتاری کے وقت عدالت کا احترام نہیں کیا اور ملزمان کو احاطہ عدالت سے گرفتار کیا گیا جبکہ رپورٹ میں بتایا گیا کہ انہیں پاسپورٹ آفس کے سامنے سے گرفتار کیا گیا۔

احتساب عدالت نے ملزم انعام اکبر کے وکیل کی عدم حاضری پر برہمی کا اظہار کیا جس پر ان کے معاون وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی چیف سیکریٹری پنجاب سے ماڈل ٹاون واقعے پر ملاقات ہے اسی لئے وہ اس وقت عدالت میں پیش نہیں ہوسکے۔

محکمہ اطلاعات سندھ میں اربوں رپے کی کرپشن کے ایک اور ملزم ریاض منیر کے وکیل کی جانب سے حاضری سے استثنی کی درخواست دائر کی گئی جس میں استدعا کی گئی کہ ملزم اپنی بیماری کی وجہ سے عدالت میں پیش نہیں ہو سکتیں جس پر جج نے کہا کہ ملزم کو کوئی ایسی بیماری نہیں جس کی وجہ سے وہ عدالت میں پیش نہیں ہو سکتے۔

احتساب عدالت کے جج نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اگر بار بار درخواستیں دی جارتی رہیں گی تو اس کیس میں ٹرائل کیسے کیا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ملزمان کے خلاف فردِ جرم تیار تھا لیکن لگتا ہے کہ ملزمان کے وکلاء بلاجواز درخواستین دائر کرکے اس میں تاخیر کرنا چاہتے ہیں۔

احتساب عدالت کے جج نے فردِ جرم مؤخر کرتے ہوئے سماعت آئندہ برس 9 جنوری تک ملتوی کردی جبکہ شرجیل میمن اور دیگر ملزمان کی درخواست پر متعلقہ حکام کو نوٹس بھی جاری کردیئے

SHARE

LEAVE A REPLY