آن لائن عالمی اخبار کی بارہویں سالگرہ کے حوالے سے 4 خواتین تخلیق کاروں کی 5 کتابوں کی تقریب اجراء جس کی پہلی تقریب 11 فروری کو انتہائی کامیابی سے کراچی میں ہوئی اور پھر ملتان میں 15 فروری کی کامیاب تقریب کرنے کے بعد تیسری اور سب سے بڑی تقریب لاہور میں ہو ئی کہ اس میں چاروں تخلیق کار بنفس نفیس موجود تھیں ۔

اسی تسلسل میں لاہور کے بعد اسلام آباد ۔ واہ ٹیکسلا ، فیصل آباد اور ممکنہ طور پر جھنگ میں مزید تقاریب منقعد ہونگی ۔

لاہور کی تقریب ایک مقامی ہال میں ہوئی جسے بہت نفاست سے سجایا گیا تھا اور اسٹیج پر خاص مہمانوں اور صاحبان کتاب کی نشستیں تھیں جسکے عقب میں ایک بڑے بینر پر کتابوں کی تصاویر اور قلم کاروں کے نام کے ساتھ کتابوں کے نام بھی تحریر تھے

lahore taqreeb2

اس پروگرام کی اہم ترین بات پوری تقریب کا فیس بک پر لائیو نشر ہونا تھا جسے تادم تحریر پندرہ ہزار سے زیادہ لوگ دیکھ چکے ہیں، دوسری اہم بات اس میں دوردراز شہروں سے بھی دوست احباب نے شرکت کی جبکہ تیسری اہم بات ملک بھر کی تمام سرکاری اور نجی تقاریب کی طرح اس تقریب کا بھی تاخیر سے شروع ہونا تھا

پروگرام کی نظامت ڈاکٹر نگہت نسیم نے کی جو میزبان ہونے کے ناطے ایک نئی بات ہے ۔عام طور پر صاحب کتاب اسٹیج پر بیٹھتا ہے لیکن طے کیا گیا کہ کسی پیشہ ور ناظم کو بلانے کی بجائے حقیقی میزبان تقریب کی نظامت کرے

تقریب کی صدارت ڈاکٹر نگہت نسیم اور ہال میں موجود متعدد ڈاکٹروں کے استاد بابائے اناٹومی ڈاکٹرجناب مظفر جلال خان نیازنے کی جو اس حوالے سے اہم بات تھی کہ ادب کے نام نہاد روایتی بڑے ناموں کا سہارا نہیں لیا گیا بلکہ اپنے اساتذہ کو عزت دی گئی

lahore taqreeb3

اسی طرح تقریب کے مہمان خصوصی لندن سے تشریف لائے عالمی اخبار کے مدیر اعلی اور ہشت پہلو شخصیت صفدر ھمدانی تھے جنہیں ڈاکٹر نگہت نسیم نے اپنے ادبی اور فکری استاد کے طور پر متعارف کروایا

مہمان اعزازی جھنگ سے ٓنے والے ڈاکٹر،ادیب اور شاعر ڈا کٹر نیاز علی محسن مگھیانہ تھے جو متعدد اردو پنجابی کتابوں کے مصنف ہیں

ناظم تقریب ڈاکٹر نگہت نسیم نے روایت کے برعکس پہلے صاحبان کتاب شاہین اشرف علی،غزالہ رشید اور دلشاد نسیم کو اسٹیج پر بلایا اور انہیں مختلف بچوں اور احباب نے گلدستے پیش کیئے

اسکے بعد مہمان اعزازی،مہمان خصوصی اور صدر محفل کو دعوت دی گئی کہ وہ اسٹیج پر اپنی نشستیں سنبھالیں اور انکو بھی گلدستے پیش کیئے گئے

lahore taqreeb4

نگار اور ڈرامہ نگار بھی ہیں لاہور سے ہی آئی تھیں اور عیاں کی مصنفہ عزالہ رشید کراچی سے تشریف لائیں ۔ دلشاد نسیم  ن شاعری کے مجموعے زیر لب کی شاعرہ جو افسانہ نگار اور ڈرامہ نگار بھی ہیں لاہور سے ہی تھیں جبکہ چراغ در چراغ کی مصنفہ شاہین اشرف علی کویت سے ٓآئی تھیں

 شاعرہ صحافی افسانہ نگار براڈکاسٹر مترجم ڈاکٹر نگہت نسیم جنکی دو کتابیں زاد راہ عشق اور دعاوں کے چراغ شائع ہوئی ہیں سڈنی سے تشریف لائیں۔

 ابتدا خالق لوح و قلم کے نام سے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ حافظ قران محمد احمد نے تلاوت کلام مجید کی جس کے بعد ذکر اس حبیب خدا کا جس کے لئیے عرش و فرش سجایا گیا ، نعت رسول مقبول پیش کی شگفتہ اور آسیہ

lahore taqreeb5

 ٭ اسکے بعد سب سے پہلے دلشاد، شاہین اور نگہت کی کتابوں پر پبلشر عرفان صدیقی نے مجموعی تاثر پیش کیا

٭دلشاد کی کتاب پر ثمینہ سید ، لبنی طاہر اور دلشاد کی دیورانی ڈاکٹر عائیشہ طارق نے اظہار خیال کیا ۔

٭ غزالہ رشید کی کتاب نہاں عیاں پر سائرہ غلام نبی ، اور صبیحہ شاہ نے روشنی ڈالی۔ صبیحہ شاہ آجکل زہنی معذور بچوں کا اسکول چلاتی ہے جس میں اس کے ہمراہ غزالہ رشید اور ان کے صاحبزادے حسن بن نسیم بھی شامل ہیں۔ ان تینوں نے حاضرین سے داد کا شکریہ اسٹیج پر آکر ادا کیا۔

٭ شاہین کی کتاب پر ان کے بھائی سید حیدر رضا رضوی ، ان کے شریک حیات اشرف علی اور ڈاکٹر نگہت نسیم نے اظہار خیال کیا۔

٭ ڈاکٹر نگہت نسیم کی کتاب پر گفتگو کے لیئے ڈاکٹر فخر عباس , خالد ندیم شانی ، اشفاق ایاز وقت پر نہیں پہنچ پائے تھے ۔ان کی شخصیت اور کتاب پر عالمی اخبار کے ادبی صفحے کی انچارج زرقا مفتی ، ان کی دیرینہ دوست گلوکارہ مسرت بانو ، زیبا خان نے اظہار خیال کیا اور ثانیہ شیخ نے ان پر لکھی اپنی ایک نظم بھی سنائی ۔

عالمی اخبار کی بارویں سالگرہ کے موقع پر جناب صفدر ہمدانی کو مبارکباد دیتے ہوئے ان کی سالی اور گورنمنٹ گرلز کالج لبرٹی لاہور کی پرنسپل گلناز ابراہیم نے ان کی انتھک محنت کو سراہا ۔عالمی اخبار کی نائب مدیر ڈاکٹر نگہت نسیم، ادبی صفحے کی انچارچ زرقا مفتی اور کویت اور عرب امارات کی بیورو چیف شاہین اشرف علی نے بھی اسٹیج پر آکر سامعین سے تالیوں کی صورت میں داد لی۔

lahore taqreeb6

٭ اسکے بعد مختصر طور پر صاحبان کتاب نے اپنی اپنی کتاب پر گفتگو ( شاہین اشرف علی ، غزالہ رشید ، دلشاد نسیم اور ڈاکٹر نگہت نسیم

اب تقریب اختتام کی طرف بڑھ رہی تھی کہ ناظم تقریب نے مہمان اعزازی کو خطاب کی دعوت دی۔ جناب ڈا کٹر نیاز علی محسن مگھیانہ نے اپنی گفتگو کے بعد اپنے پنجابی ماہیئے بھی سنائے ۔

مہمان خصوصی عالمی اخبار کے مدیر اعلی شاعر ادیب ماہر نشریات اور مرثیہ نگار جناب صفدر ہمدانی نے تقریبات کے تاخیر سے آغاز کا دل گرفتگی سے ذکر کیا
انہوں  نگہت نسیم، شاہین اشرف علی ، دلشاد نسیم اور غزالہ رشید کو ان کی کتابوں کی اشاعت پر مبارکباد دی

صدر محفل بابائے اناٹومی ڈاکٹرجناب مظفر جلال خان نیازی نے وقت کی نزاکت کے پیش نظربہت مختصر سی گفتگو میں 5 کتابوں کے اجراء پر شاعرات کو اور منتظمین کو کامیاب تقریب کی مبارکباد دی۔

lahore taqreeb7

اسکے بعد ہرصاحب کتاب نے استاد محترم جناب مظفر جلال خان نیازی صاحب کو اپنی اپنی کتابیں پیش کیں۔

آخر میں ڈاکٹر نگہت نسیم نے تمام شرکاء محفل کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اساتذہ کے احترام میں سب کو کھڑے ہوکر تالیاں بجا کر خراج تحسین پیش کرنے کی درخواست کی جس پر سب نے کھڑے ہو کر پرجوش طریقے سے تالیاں بجا کر شکریہ ادا کیا۔

lahore taqreeb8

تقریب کے اختتام پر شرکا کے لیئے ظہرانہ پیش کیا گیا

رپورٹ۔حیدر رضا رضوی

SHARE

LEAVE A REPLY