بلوچستان کے ضلع ڈیرہ بگٹی کے علاقے ٹوبہ نوخانی میں ہونے والے بارودی سرنگ کے دھماکے سے تیل اور گیس کمپنی، پاکستان پیٹرولیم لیمیٹڈ (پی پی ایل) کے 3 ملازمین ہلاک، اور 5 زخمی ہوگئے۔

لیویز حکام کے مطابق دھماکے سے متاثرہ افراد ڈیرہ بگٹی میں تیل اور گیس کے ذخائر کے حوالے سے سروے کررہے تھے کہ ان کی گاڑی ایک بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی۔

اس ضمن میں بلوچستان کے وزیر داخلہ آغا عمر بنگلزئی کا کہنا تھا کہ ’دھماکے کے نتیجے میں سروے کرنے والی ٹیم کے 3 اراکین موقع پر ہی ہلاک ہوگئے، جبکہ 5 افراد زخمی ہیں‘۔

دھماکے کے فوری بعد لیویز اور فرنٹیئر کور کے اہلکار جائے وقوع پر پہنچ گئے اور علاقے کا محاصرہ کرکے امدادی کارروائیوں کا آغاز کردیا، اور شدید زخمی افراد کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے ڈیرہ بگٹی میں قائمکمبائنڈ ملٹری ہسپتال (سی ایم ایچ) پہنچایا گیا۔

ہلاک ہونے والے افراد کی شناخت عابد حسین، اختر جان اور زکریا خان کے ناموں سے ہوئی، جن کی نماز جنازہ پاکستان پیٹرولیم لیمیٹڈ کے دفتر میں ادا کرنے کے بعد میتیں سندھ اور پنجاب میں ان کے آبائی علاقوں کو روانہ کردی گئیں۔

واقعے میں زخمی ہونے والےا فراد میں علی عباس، محمد وقاص، اکمل خان، حفیظ الرحمان اور ثناء اللہ شامل ہیں، جو ڈیرہ بگٹی کے سی ایم ایچ میں زیر علاج ہیں تاہم اب ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

تاحال کسی نے بھی اس واقعے کی ذمہ داری قبول نہیں جبکہ اس سے قبل علیحدگی پسند گروہوں کی جانب سے بلوچستان میں ہونے والے حملوں کی ذمہ داری قبول کی جاتی رہی ہے۔

یاد رہے کہ حالیہ واقعے سے محض ایک روز قبل بلوچستان کے ضلع آوران میں پیرا ملٹی دستے پر گھات لگا کے حملہ کیا گیا جس میں 6 افراد جاں بحق ہوگئے تھے، تاہم ابھی تک کسی نے ان دونوں واقعات کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔

SHARE

LEAVE A REPLY