مقبوضہ کشمیرمیں مسلمانوں کواقلیت میں بدلنےکی گھناؤنی بھارتی سازش کےخلاف مقبوضہ وادی میں مکمل پہیہ جام کیا گیا ،کٹھ پتلی انتظامیہ نےحریت رہ نماؤں کوگھرپرنظربندکردیا،ضلع رامبان میں قابض فوج نے فائرنگ کرکے مویشی منڈی کے بیوپاری کو شہید کردیا۔

مقبوضہ کشمیر میں مسلم اکثریت کواقلیت میں بدلنےکی گھناونی سازش کےخلاف حریت کانفرنس کی اپیل پردوروزہ ہڑتال کی جارہی ہے۔بھارتی آئین کےآرٹیکل 35اے کی منسوخی کے لیے بی جےپی کےحربوں پر مقبوضہ کشمیرمیں عوام سراپا احتجاج ہیں۔ مقبوضہ وادی میں آج مکمل ہڑتال ہے۔

کاروبار ی اور تجارتی مراکز بند ہیں۔ دوروزہ ہڑتال کی اپیل حریت رہ نماؤں نے دی ہے۔کشمیریوں کوخدشہ ہےکہ ارب پتی بھارتی سرمایہ کاراب مقبوضہ کشمیرمیں مغربی کنارے کی طرزپرآبادکاروں کی بستی بسالیں گے۔اورمقامی کشمیریوں کوقبرکی بھی جگہ نہیں ملےگی۔

آرٹیکل پینتیس اےکےتحت مقبوضہ کشمیرکوبھارت میں خصوصی درجہ حاصل ہےجس کےتحت صرف کشمیری ہی وادی میں جائیدادخریدنےاورورثےمیں منتقل کرنےکاحق رکھتےہیں۔ کشمیریوں کاموقف ہےکہ بھارت کی سپریم کورٹ اور پارلیمنٹ بھی آرٹیکل کومنسوخ نہیں کرسکتی۔آئین چھیڑاگیاتومزاحمت کی نئی لہرجنم لےگی۔

ادھرمقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی جاری ۔ضلع رام بن میں بھارتی فورسزکی فائرنگ سے کشمیری نوجوان شہید ہوگیا، کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی فورسزکی فائرنگ سے1نوجوان زخمی بھی ہوا۔گزشتہ 4روزمیں بھارتی فورسزکی فائرنگ سے شہید کشمیریوں کی تعداد12ہوگئی

SHARE

LEAVE A REPLY