چینی وزیرخارجہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ انہوں نے وزیراعظم عمران خان کو اپنے ملک کے دورےکی دعوت دی ہے۔

ادھر پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان چین کے ساتھ مل کر عالمی فورمز پر کام کرتا رہے گا۔چین سے مذاکرات میں دوطرفہ معاملات،غربت کے خاتمے اور روزگار میں اضافے پر بات ہوئی ہے ۔

وانگ یی نے عالمی برادری پر زوردیا کہ وہ پاکستان کی قربانیوں کو سراہے، پاکستان اپنی سرزمین دہشت گردی کے لئے استعمال نہیں ہونے دے گا۔

پاکستان کے دورےپر آئے ہوئے چینی وزیر خارجہ نے پاکستانی دفترخارجہ کا دورہ کیا۔ دفتر خارجہ میں دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کے مذاکرات ہوئے جس میں دوطرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی اپنے وفد کے ہمراہ دفتر خارجہ پہنچے جہاں ان کے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی نے ان کا استقبال کیا۔

مذاکرات کے پہلے مرحلے میں دونوں وزرائے خارجہ کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی جس کے بعد وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پاکستانی جبکہ وانگ یی نے چینی وفد کی قیادت کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق مذاکرات میں خطے کی صورتحال، سی پیک، معاشی و ثقافتی تعاون اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ دونوں وزرائے خارجہ نے اسٹریٹیجک تعاون پر مبنی شراکت داری کو مزید مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔

اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ سی پیک حکومت کی اولین ترجیح ہے کیونکہ سی پیک پاکستان کی سماجی اور معاشی ترقی کے لئے انتہائی اہم ہے۔

چینی وزیر خارجہ نے وزیر اعظم عمران خان کو چین میں ہونے والی درآمدی اشیا کی بین الاقوامی نمائش میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی دعوت بھی دی۔

ون آن ون ملاقات اور وفودکی سطح پر مذاکرات کے بعد پاک چین وزرائے خارجہ نے مشترکہ نیوز کانفرنس کی۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان چین کے ساتھ مل کر عالمی فورمز پر کام کرتا رہے گا، مذاکرات میں دوطرفہ معاملات،غربت کے خاتمے اور روزگار میں اضافے پر بات ہوئی۔

چینی وزیرخارجہ نے وزیراعظم عمران خان کو دورےکی دعوت دی ہے، ہم نے بھی چین کے صدر اور وزیراعظم کو پاکستان دورے کی دعوت دی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY