پاکستان اور چین کے درمیان پہلی فریٹ سروس کا آغاز

0
364

پاکستان اور چین نے ریل اور سمندر کے ذریعے پہلی فریٹ سروس کا آغاز کر دیا ہے جس کے تحت پہلی مال بردار ٹرین چین کے صوبہ یونان کے دارلحکومت سے روانہ ہو گئی ہے۔

چینی خبر رساں ادارے شن ہوا کی رپورٹ کے مطابق 500 ٹن کی مختلف اشیاء لے کر یہ خصوصی مال گاڑی چین کے جنوب مغربی صوبے یونان کے شہر کونمینگ سے بدھ 30 نومبر کو گوانگزو کے لیے روانہ ہوئی، جہاں سے سامان سمندری راستے سے پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی بھیجا جائے گا۔

نئے سلک روٹ یونان لمٹیڈ کے نمائندے کے مطابق اس روٹ کے قیام سے اخراجات 50 فیصد تک کم ہوں گے۔

چینی خبر رساں ادارے کے مطابق فریٹ سروس شروع ہونے سے چین کے مقامی صنعت کاروں کو اپنی اشیاء عالمی مارکیٹ تک پہنچانے میں مدد ملے گی۔

پاکستان اور چین کے درمیان اقتصادی راہداری کا قیام بھی عمل میں لایا جا رہا ہے جس کے تحت چین سے رواں سال اکتوبر میں 100 سے زائد مال بردار کنٹینر پاکستان روانہ ہوئے تھے، جو ہنزا کے راستے 12 نومبر کو گوادر پہنچے تھے۔

پہلے مال بردار قافلے کے پہنچنے کے بعد گزشتہ ماہ 13 نومبر کو سی پیک کے تحت گوادر پورٹ کا افتتاح کیا گیا تھا، افتتاحی تقریب میں سابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف، وزیر اعلیٰ بلوچستان، مختلف ممالک کے سفیروں اورمختلف وفاقی وزراء نے شرکت کی تھی۔

چین سے آنے والا پہلا 100 کنٹینر کا قافلا سب سے پہلے سوست ڈرائی پورٹ پر رکا تھا، جہاں سے کسٹم کلیئرنس کے بعد قافلہ ہنزا کے راستے گوادر پہنچا۔ گوادر پورٹ سے ہی بنگلہ دیش، سری لنکا اور متحدہ عرب امارات کے لیے بحری تجارتی جہاز سفر کریں گے۔

SHARE

LEAVE A REPLY