ترک صدر نے کہا ہے کہ ترک فوجی دستے اور اُن کے اتحادی شامی جنگجو شمالی شامی شہر الباب کے مرکز میں داخل ہو گئے ہیں۔ شامی شہر الباب جہادی گروپ ’اسلامک اسٹیٹ‘ یا داعش کا ایک اہم گڑھ سمجھا جاتا ہے۔

ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے آج بحرین کے سرکاری دورے پر روانگی سے قبل صحافیوں کو بتایا کہ ’اسلامک اسٹیٹ‘ کے جنگجوؤں نے الباب شہر سے نکلنا شروع کر دیا ہے۔

اس شہر پر ’اسلامک اسٹیٹ‘ کے خلاف ترک فوجی دستوں اور ترک حمایت یافتہ شامی باغیوں کے حملے کئی ہفتوں سے جاری تھے۔ ترکی کے حمایت یافتہ شامی باغی دستوں کی کوشش ہے کہ وہ اپنے حریف شامی حکومتی دستوں کےپہنچنے سے قبل ہی الباب پر قبضہ کر لیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY