دس ارب روپے کی پیشکش اور لوڈ شیڈنگ …سلیم کاوش

0
261

دس ارب روپ کی پیشکش وہ.بهی عمران کو
اس نے تو ایک روپیہ بهی نہیں لینا.
اسے ڈاکٹر عاصم، شرچیل میمن ، زرداری یا ایان زرداری سمجهہ رکها ہے؟
یا پهر اپنے جیسا ضمیر فروش سمجهہ رکها ہے؟

ویسے پیشکش کرنے والوں کا گهٹیا پن یہ ہے کہ جہاں ڈاکڑ عاصم ملکی خزانے سے 479 ارب روپے کی کرپشن کرتا ہے وہاں 10 ارب روپے عمران کو زبان بندی کا دے رہے ہیں …

عقل کے اندهو !!

پاکستان کو 3 سے 6 ماہ میں بجلی کے بحران سے نکالنے کیلئے صرف اور 79 ارب چاہئیں .

ڈاکٹر عاصم کو 400 ارپ معاف کر دو صرف 79 ارب لیکر قوم پر خرچ کر دو.

1 میگا واٹ کے 4000 جنریٹر سپلائی اور انسٹالیشن سمیت. اس کیلیےصرف 79 ارب ہی چاہییں چاہئیں.

یہ کنٹریکٹ کسی چہیتی چینی یا ترک کمپنی کو ہی دے دو.

جاو اس کمپنی میں پہلے سے حصہ دار بهی بن جاو لیکن قوم کو اندهیروں سے تو نکالو.

یہ 79 ارب روپے خرچ کرتے ہو تو 22 کروڑ عوام کی زبان بند ہو جاتی ہے.
لیکن …..

کیا کیا جائے تمہیں تو عادت ہی کرپشن کی ہے.

کرپشن کا زہر ہر ادارے اور ہر فرد میں اتارے جا رہے ہو بالکل ایسے جیسے ڈرگ مافیا کا ڈان کسی شہر کے گلی محلوں میں ہر بڑے بچے ، مرد و عورت کو نشے کا عادی کر دیتا ہے.

معاشی بدعنوانی کے اس جال میں پوری قوم کو پهنسایا.

فوج، مذہب، عدلیہ اور پارلیمان تک کو ناکارہ کر رہے ہو.

اب اس بد عنوانی کے جال میں خود پهنستے جا رہے ہو.

سلیم کاوش

SHARE

LEAVE A REPLY