بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اسرائیل کے 3 روزہ دورے کے دوران اسرائیلی قیادت سے ملاقاتیں کریں گے جبکہ دونوں ممالک کے درمیان اربوں ڈالر کے دفاعی معاہدے ہونے کا بھی امکان ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کو ہمیشہ سے ہی اقوام متحدہ میں اپنے حق میں ووٹ حاصل کرنے کے لیے اتحادیوں کی تلاش رہتی ہے اور وہ ایسے ممالک کے ساتھ کاروباری روابط بھی استوار کرنے کی خواہش رکھتا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق منگل (4 جولائی) سے شروع ہونے والا نریندر مودی کا دورہ اسرائیل کسی بھی بھارتی وزیراعظم کا اسرائیل کا پہلا دورہ ہے جس کے بارے میں اسرائیلی حکام کا خیال ہے کہ یہ ایک تاریخی دورہ ثابت ہوگا۔

اے ایف پی کے مطابق اسرائیلی تجزیہ نگاروں کا ماننا ہے کہ نریندر مودی اپنے تین روزہ دورے میں رملہ میں فلسطینی قیادت سے ملاقاتیں نہیں کریں گے۔

SHARE

LEAVE A REPLY