شام میں اتوار کے روز شروع ہونے والی جزوی جنگ بندی بدستور جاری ہے۔ شامی صوبوں درعا، السویدا اور القنیطرہ میں ہونے والی یہ جنگ بندی اُس ’’ڈی ایسکلیشن ڈیل‘‘ کا حصہ ہے جس کی توثیق روسی اور امریکی صدور نے جی ٹوئنٹی سمٹ کے موقع پر کی تھی۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق جنگ بندی کا آغاز اتوار کی دوپہر ہوا اور اس وقت کے بعد سے مذکورہ علاقوں میں نہ تو جھڑپوں کی اطلاعات ہیں اور نہ ہی فضائی حملوں کی۔ روس اردن کی سرحد کے قریب ان شامی صوبوں میں جنگ بندی پر نظر رکھنے کے لیے اپنی ملٹری پولیس کو وہاں تعینات کرے گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY