چوہدری شوگر ملز کے ریکارڈ میں ٹیمپرنگ کے معاملہ میں اہم پیشرفت ہوئی ہے، ایس ای سی پی کے تین افسران علی عظیم، ماہین فاطمہ اور عابد حسین نے ریکارڈ میں ٹیمپرنگ کا اعتراف کرلیا ہے۔

ایف آئی اے کو ریکارڈ کرائے اعترافی بیان میں تینوں افسران نے کہا ہے کہ انہوں نے چیئرمین ایس ای سی پی کے دباؤ پر ریکارڈ میں پرانی تاریخ کا نوٹ لکھا ہے۔ افسران کا کہنا ہے کہ چوہدری شوگر ملز کیس کی فائل بند کرنے کیلئے سخت دباؤ تھا، چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی نے حکم کی تعمیل نہ کرنے پر گلگت بلتستان سمیت دور دراز علاقوں میں تبادلوں کی دھمکی دی تھی۔

ایس ای سی پی کے تینوں افسران نے ریکارڈ میں ردوبدل کا ذمہ دار چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کو قرار دیا ہے۔ واضح رہے کہ ایف آئی اے نے عدالت کے حکم پر ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا، چیئرمین ایس ای سی پی ریکارڈ ٹیمپرنگ کے مقدمے میں شامل تفتیش ہیں اور راہداری ضمانت پر رہا ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY