کلثوم نواز کے اثاثے ایک سال میں ساڑھے سترہ گنا بڑھے، جے آئی ٹی رپورٹ

0
62

سپریم کورٹ کے حکم پر پاناما مقدمے میں شریف خاندان کے اثاثوں کی تحقیقات کے لیے بنائی گئی مشترکہ تحقیقات ٹیم نے اپنی رپورٹ میں نواز شریف ،حسین نواز ،حسن نواز اور مریم نواز کے ساتھ کلثوم نواز اور اسماء نواز سے متعلق بھی انکشافات کئے ہیں ۔
پاناما جے آئی ٹی کے تہلکہ خیز انکشافات کا سلسلہ جاری ہے۔ رپورٹ کے مطابق کلثوم نواز فیملی کاروبار کا حصہ ہیں، کلثوم نواز کے اثاثے ایک سال میں ساڑھے سترہ گنا بڑھے ۔ اسماء نواز کے اثاثے1991 سے 1993 کے دوران تین کروڑ پندرہ لاکھ ہو گئے ۔

کلثوم نواز کے اثاثے ایک سال میں ساڑھے سترہ گنا بڑھے،1991 اور92 کے دوران کلثوم نواز کے اثاثے سولہ لاکھ سے بڑھ کر دو کروڑ چھیاسی لاکھ ہو گئے ۔ اس عرصے میں کلثوم نواز کی آمدن صرف دو لاکھ اناسی ہزار روپے تھی ۔ 1997 میں کلثوم نواز کے اکاؤنٹ سے پیسے نکال لئے گئے ۔ تاہم کسی کو معلوم نہیں کہ رقم کہاں گئی ؟ رپورٹ کے مطابق کلثوم نواز ترسیٹھ اعشاریہ پچہتر ملین مالیت کی چھانگلہ گلی جائیداد کی مالک ہیں ۔

انہوں نے 2013اور 14 کی ویلتھ اسٹیٹمنٹ میں جائیداد کو چھپایا، وزیر اعظم کی صاحبزادی اسماء نواز جو کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈاار کی بہو ہیں،ان کے اثاثے1991-92 سے 1992-93 کے دوران تین کروڑ پندرہ لاکھ ہو گئے ۔ بغیر کسی ظاہری آمدن کے اسماء نواز کے اثاثے ساڑھے اکتیس گنا بڑھ گئے ۔جبکہ خسارے میں چلنے والی چوہدری شوگر مل بھی اسماء کو منافع دیتی رہی ۔ چوہدری شوگر مل نے گیارہ لاکھ اٹھائیس ہزار کا منافع اسماء کو دیا ۔ اسماء نواز کو اپنے والد سے بھی تین کروڑ آٹھ لاکھ روپے ملے ۔

SHARE

LEAVE A REPLY