کراچی ،پانی کے 204 نمونوں میں سے 202 غیرموزوں

0
132

کراچی کی 24 مختلف یونین کونسلوں سے حاصل کئے گئے پینے کے پانی کے 204 نمونوں میں سے 202 نمونے انسانی استعمال کے لئے غیرموزوں پائے گئے۔
میئر کراچی وسیم اختر نے کراچی کی مختلف یونین کونسلوں سے حاصل کئے گئے پانی کے نمونے انسانی استعمال کے لئے غیر موزوں ثابت ہونے پر گہری تشویش ظاہر کرتے ہوئے ادارہ فراہمی و نکاسی آب سے کہا ہے کہ شہریوں کو پانی کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں تاکہ غیر صحت بخش پانی کے استعمال سے شہریوں کی صحت اور جان کو لاحق خطرات دور کئے جاسکیں۔

انہوں نے یہ بات کے ایم سی فوڈ لیبارٹری کی واٹر ٹیسٹنگ رپورٹ آنے کے بعد کہی جس کے مطابق کراچی کی 24 مختلف یونین کونسلوں سے حاصل کئے گئے پینے کے پانی کے 204 نمونوں میں سے 202 نمونے انسانی استعمال کے لئے غیر موزوں پائے گئے۔

ان نمونوں کا تجزیہ کے ایم سی فوڈ لیبارٹری میں اسٹینڈرڈ ٹیسٹنگ کے طریقے سے کیاگیا۔
بلدیہ عظمیٰ کراچی کی کونسل کے گزشتہ اجلاس میں شہر کے مختلف علاقوں میں آلودہ اور غیرصحت مند پانی کی فراہمی کے حوالے سے پیش کی گئی قرارداد منظورکی گئی تھی ۔

اس منظوری کے بعد میئر کراچی وسیم اختر نے ہدایت کی تھی کہ فوری طور پر کراچی کے مختلف علاقوں سے وہاں فراہم کئے جانے والے پانی کے نمونے حاصل کئے جائیں اور ان کا طبی اور سائنسی بنیاد پر تجزیہ کیا جائے ۔

محکمہ فوڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول کے سینئر ڈائریکٹر اصغر عباس شیخ نے میئر کراچی کو جمع کئے گئے پانی کے نمونوں اور ان کے ٹیسٹ کی رپورٹ پیش کی۔

SHARE

LEAVE A REPLY