پہچان 786 کمیونٹی اورگنائزیشن نے ہفتے کے روز عید سے پہلے عید میلے کا انعقاد کیا تھا۔جسمیں کمیونٹی نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔میلے میں سیاسی اور سول سوسائٹی کے افراد بھی بڑی تعداد میں شریک ہوئے۔میلے کو 1 بجے شروع تھا لیکن 11بجے سے لوگوں کا ہال میں انا شروع ہوا۔ سارے سٹالز پے لوگوں کا رش رہا۔عید کی شاپنگ ہورہی تھی ۔

سنگر شایان رفیقی شاہد جاوید اور اسکے ساتھ طبلہ شیوا نے سٹیج پے حوبصورت آوازوں میں گیتوں سے لوگوں کے دل جیت لئے۔ سنگرچیری ضیا نے بھی خوبصورت گانے گائے ۔انڈین کمیونٹی کے سکول کے بچوں نے بھی کلچرل ڈانس کا پرفارم کردیا۔
پاکستانی بچوں نے بھی اس میلے میں سٹیج پر پرفارم کیا۔

مصالحہ ٹی وی کی مشہور شیف نورین عامر کی گائیڈ لائن سے حواتین نے کشمیری ٹی چنا چاٹ حلوہ پوری ٬چولے٬ترکاری٬بریانی٬سینڈویچز ٬حلیم بنائے۔جو بے حد پسند کئے گئے۔

میلے کو 7 بجے پے اختتام کرنا تھا لیکن لوگوں کی شاپنگ کی وجہ سے میلہ رات کو 9 بجے تک جاری رہا۔پہچان 786 گروپ گزشتہ 5 سالوں سے عید سے عید میلے کا انعقاد کرتی ہے۔

عالمی اخبار کی نائب مدیر افسانہ نگار اور شاعرہ نگہت نسیم نے کہا کہ مجھے بڑی خوشی ہوتی ہے۔کہ جب میں پاکستان کے ایسے ایونٹ میں جاتی ہو جہاں پربزرگ نوجوان بچے مرد عورتیں سب خصہ لیں اور حوشی سے ایک دوسرے کو آگے بڑھنے میں مدد دیتے ہیں۔ڈاکٹر نگہت نسیم نے شفق جعفری کو اس کامیاب ایونٹ پر مبارکباد دی۔اورکہا ہماری لئے فخر کی بات ہے۔کہ بیس دن کے اندر ایسے کامیاب میلے کا انعقاد کیا۔

ڈاکٹر نگہت نسیم نے عالمی اخبار کی طرف سے شفق جعفری اس کی ٹیم کو کامیاب میلے اور سنگر شایان اور شاہد جاوید سٹیج پرفارمنس پر شکریہ ادا کیا۔

قونصلر جنرل آف پاکستان عبد الماجد اصفہانی کو نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا۔بڑی تعداد میں بھائی بہنیں میلے میں موجود ہیں۔بہنوں نے سٹالز لگائے ہے۔قونصلر جنرل آف پاکستان نے کہا کہ دل حوش ہورہا ہے کہ ہماری حواتین میں ٹیلینٹ کی کمی نہیں ۔اور اسنے شفق جعفری اور اسکی ٹیم کو کامیاب میلے پر مبارکباد دی

پاکستان ایسوسی ایشن کے صدر عباس رانا اور انکی ٹیم نے میلے میں شرکت کی۔اور کامیاب میلے کو سراہا۔

پاکستان پروفیشنلز کے چیف ایگزیکٹیو ڈاکٹر حرم کیانی نے شفق جعفری کو کامیاب میلے پر مبارک باد دی اور کشمیری ٹی کی تعریف کی۔
میلے میں شریک افراد نے میلے کو بے حد پسند کیا۔اور شفق جعفری سے آئندہ بھی کمیونٹی کیلئے ایسی کامیاب میلوں کے انعقاد کی اظہار کیا گیا۔

رپورٹ جابر حسین سڈنی

SHARE

LEAVE A REPLY