میکسیکو میں پندرہ روز کے دوران دوسرے زلزلے سے بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے، سات اعشاریہ ایک شدت کے زلزلے سے کئی عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں۔ اب تک 224 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی گئی ہے۔

19ستمبر کی دوپہر میکسیکو سٹی کے نواحی علاقے کے رہائشیوں پر ایک اور قیامت بن کر ٹوٹی جب سات اعشاریہ ایک شدت کے زلزلے نے درجنوں رہائشی عمارتوں، سپر مارکیٹس، فیکٹریوں کو سیکنڈز میں ملبے کے ڈھیر میں تبدیل کردیا ۔

دیکھتے ہی دیکھتے اسکول میں پڑھتے، شرارتیں کرتے بچوں کے قہقہے آہوں میں تبدیل ہوگئے۔

19 ستمبر 1985 میں تاریخ کے بدترین زلزلے کی یاد میں ڈرلز میں مصروف افراد کو یہ جاننے میں کچھ وقت لگا کہ ایمرجنسی الارم ڈرلز کا حصہ نہیں ۔

امریکی جیو لوجکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز Puebla میں تھا ۔

دو ہفتے قبل میکسکو میں تاریخ کا شدید ترین زلزلہ آیا تھا جس کی شدت ریکٹر اسکیل پر8 اعشاریہ ایک تھی اور اس میں 90 افراد ہلاک ہوئے تھے ۔

زلزلے کے بعد میکسیکو میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں، مقامی حکام نے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے ۔

SHARE

LEAVE A REPLY