حماس کے لیڈر اسماعیل ہنیہ نے فلسطینیوں سے نئے ’انتفادہ‘ یا مزاحمت شروع کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے اور امریکا کی پالیسی میں تبدیلی کو ’اعلان جنگ‘ قرار دیا ہے۔

دریں اثناء فلسطینی اتھارٹی نے مغربی کنارے اور مشرقی یروشلم میں عام ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔ دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے ایک حقیقت کو تسلیم کیا ہے۔

ترک وزیراعظم علی بن یلدرم نے کہا ہے کہ امریکا نے ’اس بم کی پِن کھینج دی ہے، جو خطے میں پھٹنے کے لیے تیار ہے‘۔ انہوں نے واشنگٹن حکومت سے یہ فیصلہ واپس لینے کی اپیل کی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY