کسی قیدی کو عہدے کے سبب سہولت نہیں دی جائیگی،وزیر اعلیٰ سندھ

0
665

وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ ہرقیدی کوجیل میں قانون کے مطابق سہولیات دی جاتی ہیں، کسی کو اس کے عہدے کی وجہ سےخصوصی سہولت نہیں دی جائے گی۔ شہر میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں کو ختم کرنا ناممکن ہے۔

میڈیاسے گفتگو کے دوران کراچی کے میئر وسیم اختر کو جیل میں خصوصی سہولتوں سے متعلق سوال پروزیراعلیٰ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ہرقیدی کوجیل میں قانون کےمطابق سہولیات دی جاتی ہیں، کسی بھی قیدی کو اس کے عہدے کی وجہ سے خصوصی سہولیات فراہم نہیں کی جاسکتیں۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کراچی آپریشن کامیاب اس وقت ہوگا جب پولیس اپنے پاؤں پر کھڑی ہوگی جب کہ 22 اگست کے واقعات کے ذمے داروں کو سزا دی جائے گی۔

ان کہنا تھا کہ شہر میں تجاوزات کا خاتمہ ایک دن میں ممکن نہیں لیکن اس کے خلاف کارروائی جاری رہے گی، تجاوزات کےزمرے میں جو بھی عمارت آئے گی وہ گرا دی جائے گی۔صرف سیاسی جماعت کے دفاتر ہدف نہیں ،گجرنالے پر تعمیر 3 منزلہ عمارتیں بھی گرائی گئی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسٹریٹ کرائم کو ختم کرنا ممکن نہیں، اسٹریٹ کرائم میں ملوث ملزمان کو پکڑ کر سزا دینا ہماری ذمے داری ہے۔گزشتہ مہینے میں ہرعلاقے میں جرائم میں کمی ہوئی جب کہ جرائم ختم کرنے کے لیے کوششیں جاری رکھیں گے۔

وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ پولیس کے ہاتھ میں صوبے کا امن وامان ہے جب کہ پولیس نے ٹھیک کام کیا توصوبے کے لوگ چین کی نیند سوئیں گے، سندھ میں موجودہ صورتحال کی وجہ سے وفاقی اداروں کی مدد لینا پڑرہی ہے۔

مراد علی شاہ نے سینٹرل پولیس آفس کراچی میں ترقی پانے والے پولیس افسران کےاعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب میں کہا کہ ملک کے لیے جانیں قربان کرنے والے قابل تعریف ہیں۔ ترقی پانے والے افسران کی ذمے داری اور بڑھ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پولیس کےلئے فنڈنگ میں اضافہ ہورہا ہے، گزشتہ سال پولیس کے لئے رکھی گئی رقم خرچ نہیں کی جاسکی، پیسے مختص کرنے کا فائدہ نہیں ہے جب تک اس کا بروقت استعمال نہ ہوسکے۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مزید کہا کہ سندھ میں 3ماہ کے اندر اینٹی رائٹ فورس بنانا ہوگی

SHARE

LEAVE A REPLY