کیلشیئم کی گولیاں ۔ خون کی شریانوں کے امراض کا خطرہ

0
927

خطرہ بڑھ جاتا ہے جو ہارٹ اٹیک یا فالج کا باعث بنتے ہیں۔

یہ انتباہ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

جان ہوپکنز یونیورسٹی اسکول آف میڈیسن کی تحقیق کے مطابق کیلشیئم سپلیمنٹس کے استعمال کے نتیجے میں خون کی شریانوں کے امراض کا خطرہ پیدا ہوتا ہے جو کہ امراض قلب کی سب سے بڑی نشانی ہے۔

تاہم غذا کے ذریعے جسم کا حصہ بننے والی کیلشیئم امراض قلب کا خطرہ کم کرتی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ وٹامنز اور منرلز سپلیمنٹس خصوصاً کیلشیئم جو کہ ہڈیوں کی صحت بہتر بنانے کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں، درحقیقت ان کا زیادہ استعمال دل اور خون کی شریانوں کے لیے نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔

یہ نتیجہ 45 سے 84 سال کی عمر کے ڈھائی ہزار سے زائد افراد کے ڈیٹا کا جائزہ لینے کے بعد سامنے آیا۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ جو لوگ کیلشیئم سپلیمنٹس استعمال کرتے ہیں، ان کی شریانوں میں خون گاڑھا ہونے یا سکڑنے کا امکان 22 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔

محققین کے خیال میں اس کی ممکنہ وجہ زیادہ مقدار میں کیلشیئم کو جسم کا حصہ بنانے پر اس کی سطح خون میں بڑھنا ہوسکتی ہے جو شریانوں کو سکڑنے پر مجبور کردیتی ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے ابھی مزید تحقیق کی ضرورت ہے تاہم لوگوں کو چاہیئے کہ وہ ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر خود سے کیلشیئم سپلیمنٹس کے استعمال سے گریز کریں۔

SHARE

LEAVE A REPLY