عمران خان کے خلاف توہین عدالت کا ایک کیس ختم

0
102

چیرمین تحریک انصاف عمران خان کی جانب سے دستخط شدہ معافی نامہ جمع کرانے کے بعد الیکشن کمیشن نے توہین عدالت کا ایک کیس ختم کردیا۔
چیف الیکشن کمشنر سردار رضا کی سربراہی میں 5رکنی بینچ کیس کی سماعت کررہا ہے۔
سماعت کے دوران ان کے وکیل بابر اعوان نے دلائل دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ عمران خان کے وارنٹ گرفتاری کے احکامات معطل کر چکی، اداروں کے احترام میں آج عمران خان الیکشن کمیشن کے سامنے پیش ہوئے۔
بابر اعوان نے استدعاکی کہ عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کی جائے۔
رکن الیکشن کمیشن ارشادقیصرنے سوال کیا کہ کیا آپ کےموکل الیکشن کمیشن میں غیرمشروط معافی مانگنےکوتیار ہیں۔
بابر اعوان نے کہا کہ ہم پہلےدوبارالیکشن کمیشن سےمعافی مانگ چکےہیں۔
عمران خان کے وکیل نےکہا کہ9جنوری کو دی گئی نظر ثانی درخواست واپس لیتےہیں۔
چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا کہ کیاجواب واپس لینےسےتوہین آمیزالفاظ بھی واپس ہوجاتےہیں؟
سماعت کے دوران رکن الیکشن کمیشن ارشاد قیصر نے بابر اعوان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ کو ہمارے خلاف استعمال ہونے والے الفاظ پر افسوس ہے جب کہ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ کیا ہم یہ الفاظ پڑھ دیں، ہمیں شرم نہیں آتی جو الفاظ ہمارے خلاف استعمال کئے گئے وہ پڑھیں۔
جس پر بابر اعوان نے کہا کہ میں آپ کو بھی وہ الفاظ پڑھنے نہیں دوں گا، اڈیالہ جیل میرا سسرال ہے، میں الفاظ نہیں پڑھتا آپ مجھے سسرال بھیج دیں۔
گزشتہ سماعت کے موقع پر الیکشن کمیشن نے عمران خان کی جانب سے جمع کرائے جانے والے جواب کو تسلیم نہ کرتے ہوئے ان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتار ی جاری کیے تھے، جس پر پی ٹی آئی نے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا اور ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری معطل کر دئیے تھے ۔

SHARE

LEAVE A REPLY