مختار بٹر کی ز یورات اور پیسہ بٹورنے کے لیے نصف درجن شادیاں

0
373

مختار بٹر کی ز یورات اور پیسہ بٹورنے کے لیے نصف درجن شادیاں
اس مکروہ فعل میں اسکے گھر والے بھی اسکے ساتھ ہیں
’’شادی کے بعد ظالم باپ نے اپنے بیٹے کو آج تک نہیں دیکھا‘‘ سابقہ بیوی کا انکشاف

فرینکفورٹ ، جرمنی / گوجرانوالہ )تحقیقاتی ٹیم(خواتین سے صرف مال بٹورنے کی خاطر ان سے شادیوں کا ڈرامہ رچانے والے مختار اکبر بٹر عرف عاطف بٹر نے پاکستان میں چھ خواتین کو اپنے جال میں پھنسا کر ان سے شادی کی پھر ان سے زیورات ، نقدی اور قیمتی سامان ہتھیا کر یہ کہہ کر جرمنی چلا جاتا کہ اب انکو جرمنی بلانے کے لیے کاغذات تیار کروانے ہیں ۔ جس کے بعد وہ دوبارہ اپنی بیویوں سے کبھی رجوع نہ کرتا۔ مختار اکبڑ بٹر عرف عاطف بٹر ولد چوہدری محمد اکبر بٹر جن کا تعلق پیپلز کالونی گوجرانوالہ سے ہے فراڈ ، دھوکہ دہی ، منی لانڈرنگ اور انسانی سمگلنگ کے دھندے میں بھی ملوث ہے اور اس وقت بھی اس کے خلاف جرمن عدالتوں میں دو کیس بھی چل رہے ہیں۔
مختار اکبڑ بٹر عرف عاطف بٹر کی ایک سابقہ بیوی کی بھابھی نے عالمی اخبار کی تحقیقاتی ٹیم کو یہ بتایا کہ انکا تعلق تحصیل فیروز والہ ضلع شیخوپورہ سے ہے، 17نومبر 2005ء میں مختار اکبر بٹر اپنے والد ، والدہ ،بہن بھائیوں ، سمیت دو سو افراد کی بارات لیکر خاتون کو بیاہ کر لے گیا۔ لڑکی والوں نے بیٹی کو جہیز میں کافی زیورات ، تقدی، اور قیمتی سامان دیا۔شادی کے دو ہفتے بعد بتایا گیا کہ مختار بٹر عرف عاطف بٹر کو فوراًجرمنی واپس جانا ہے تاکہ وہ بیوی کو اپنے پاس بلا نے کے لیے کاغذات بنوا سکے۔ جانے سے قبل مختار اکبڑ بٹر عرف عاطف بٹر نے لڑکی سے تمام زیورات، قندی اور قیمتی اشیاء بھی لی لیں۔ جرمنی پہنچنے کے بعد مختار بٹر نے چند ماہ بیوی اور سسرالیوں کو یہ گولی دیکر ٹرخایا کہ وہ بیوی کو بلانے کے لیے کاغذات تیار کر رہا ہے اس میں کچھ وقت لگ جاتا ہے۔ اسی اثناء میں اسکے ہاں ایک بیٹا بھی پیدا ہوگیامگر وقت گزرنے کے ساتھ راز افشاں ہو گیا کہلڑکی والوں کے ساتھ دھوکہ ہوا ہے ۔مختار بٹر پاکستان اور جرمنی میں پیلے سے شادیاں کر چکا تھا۔لڑکی کی ماں یہ براداشت ن ہکر سکی اسے دل کا دورہ پڑا اور چند ماہ میں خالق حقیقی سے جا ملی۔ لڑکی کے ساتھ گھر میں اتنا برا سلوک کیا گیا کہ وہ خود خلع لیکر کر اپنے مہکے واپس چلی گئی۔ آج تک مختار بٹر نے اپنے بیٹے کو کبھی دیکھا نہیں اور نہ ہی اسکی کفالت کا ذمہ اٹھایا۔ چوہدری اکبر بٹر، اسکے بیٹے اقبال بٹر ، اور بیٹیاں شہلا بٹر اور غزالہ بٹر بھی شادیوں کے فراڈ میں برابر کی شریک ہوتی ہیں۔ مختار اکبر بٹر عرف عاطف بٹر نے جب جرمنی شادی رچائی تو ماں باپ سمیت فیملی کے دیگر افراد بھی شریک ہوئے۔

مختار اکبر بٹر عرف عاطف بٹر نے شادی اور جرمنی لیجانے کا جھانسہ دیکر نارووال کے ایک امیر گھرانے کی لڑکی کو گھر سے بھگا کر شادی بھی کی جو اپنے ساتھ کلع سے زائد سونا لیکر مختار اکبر بٹر عرف عاطف بٹر کے چنگل میں پھنس گئی۔جب بھی کوئی قانونی چارہ جوئی کرتا ہے تو چوہدری اکبر بٹر اور اسکی فیملی کے افراد ایک عاق نامہ دکھا دیتے ہیں جو کسی وقت میں انہوں نے اخبار میں بھی دیا تھا ۔ مگر عاق نامے کے شائع ہونے کے بعد بھی ساری فیملی مختار اکبر بٹر کے ساتھ تمام جرائم میں شریک رہتی ہے اگر کہیں حالات زیادہ خراب ہونے لگیں توچوہدری اکبر بٹر اپنے ایک رشتہ دار جج جناب اعجاز بٹر سے رابطہ کرتے ہیں جو قانونی داؤ پیچ لگا کر انکی جان بچا دیتے ہیں۔اسکے علاوہ جان سے مارنے کی دھمکیاں اور بدمعاشی کرکے بھی اپنے شکاروں کا منہ بند کروانے کی کوشش کرتے ہیں۔ سابقہ بیوی ابھی تک انصاف کی منتظر ہے کہ اسکے بیٹے کو جائیداد میں کوئی حصہ ملے نا ملے مگر اسے باپ کا نام شناخت تو ملے تاکہ وہ بڑا ہوکر معاشرے میں سر اٹھا
کر زندگی بسر کرے

SHARE

LEAVE A REPLY