جودھ پور کی ایک عدالت نے بھارت کےسرکردہ سادھو باپو آسارام کو ایک نابالغ لڑکی سے جنسی زیادتی کے مقدمے میں مجرم قرار دیتے ہوئے عمرقید کی سزا سنا دی ہے۔

باپو آسارام پر الزام تھا کہ انھوں نے اپنے آشرم میں اگست 2013 ءمیں 16 سال کیایک لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔بابا پر ایک دوسری خاتون کے ریپ کے الزام میں ایک اور مقدمہ بھی چل رہا ہے۔

77 برس کے باپو آسارام ساڑھے چار برس سےجودھپور جیل میںقید ہیں۔ وہ ایک مقبول سادھو ہیں اور 19 ملکوں میں ان کے 400 سے زیادہ آشرم ہیں۔ان کے پیروکاروں کی تعداد کروڑوں میں بتائی جاتی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY